1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کشمیر میں دو مشتبہ علیحدگی پسند ہلاک، بھارتی پولیس

بھارت کے زیر کنٹرول کشمیر میں تعینات سکیورٹی فورسز نے دو مشتبہ علیحدگی پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ رواں برس کے دوران ڈیڑھ سو کے قریب علیحدگی پسندوں مارے جا چکے ہیں۔

 خصوصی انسداد دہشت گردی پولیس فورسز نے علیحدگی پسندوں کی نشاندہی پر مرکزی شہر سرینگر سے پینتالیس کلو میٹر کے فاصلے پر واقع  سَوپور اور اس کے آس پاس کے علاقے کو گھیرے میں لے لیا تھا۔

مقامی پولیس کے مطابق دونوں علیحدگی پسند سَوپور کے علاقے میں دو طرفہ فائرنگ کے دوران ہلاک ہوئے۔ سری نگر کی پولیس نے بتایا ہے کہ وہ اس علاقے میں مزید علیحدگی پسندوں کی تلاش جاری رکھے ہوئے ہیں۔

کشمیر: بھارتی دستوں کی فائرنگ سے پانچ سالہ پاکستانی بچی ہلاک

کشمیر میں دو عسکریت پسند اور آٹھ سکیورٹی اہلکار ہلاک

کشمیر: ہندو یاتریوں کے قتل کے پیچھے لشکر طیبہ، بھارتی پولیس

ان تازہ جھڑپوں کا آغاز دو دن پہلے جنوبی کولگام ضلع میں ہونے والی  بھارتی فورسز کی کاروائی تھی جس میں ایک مشتبہ علیحدگی پسند کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ اس کے چند گھنٹوں بعد علیحدگی پسندوں نے سرینگر کے پاس پولیس  بس پر گھات لگا کر   کیے گئے حملے کے دوران ایک بھارتی پولیس افسر ہلاک اور سات کو زخمی کر دیا  تھا۔

Indien Pakistan Teilung (picture alliance/AP Photo/D. Yasin)

گزشتہ برس برہان وانی نامی عسکریت پسند کی ہلاکت کے بعد بھارت کے زیر کنٹرول کشمیر میں سلامتی کی صورت حال شدید خراب بتائی جاتی ہے

 پچھلے ماہ جنوبی پُلوامہ ضلع میں علیحدگی پسندوں نے ایک پولیس چوکی پر حملے کے دوران  آٹھ پولیس اہلکار ہلاک کر دیے تھے جبکہ  بھارتی فورسزکی جوابی کاروائی کے نتیجے میں تین حملہ آور بھی ہلاک ہوئے تھے۔

 بھارتی پولیس رواں برس کے آغاز سے 140 مشتبہ علیحدگی پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کر چکی ہے لیکن آزاد ذرائع سے ان دعوؤں کی تصدیق ممکن نہیں ہے۔

مسئلہ کشمیر تقسیم ہند سے چلا آ رہا ہے۔  مقبوضہ کشمیر کے علیحدگی پسند گروپوں میں کچھ گروپ کشمیر کے مکمل خودمختار آزادی کے حامی ہیں تو کچھ اسے پاکستان کا حصہ بنانا چاہتے ہیں۔

ویڈیو دیکھیے 01:14

کشمیری باغی رہنما کی تدفین میں پاکستانی پرچم لہرائے گئے

DW.COM

Audios and videos on the topic