1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کشمیر میں دو عسکریت پسند اور آٹھ سکیورٹی اہلکار ہلاک

بھارتی زیر انتظام کشمیر میں عسکریت پسندوں کی جانب سے ایک حکومتی کمپاؤنڈ پر قبضے کے لیے حملے کے نتیجے میں بھارتی پولیس کے آٹھ اہلکار ہلاک ہو گئے۔ سکیورٹی فورسز کی جانب سے دو حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا گیا۔

خبر رساں ادارے نے بھارتی زیر انتظام کشمیر کے اعلیٰ پولیس حکام کے مطابق پلواما میں قائم ایک  پولیس کیمپ پر عسکریت پسندوں نے آج ہفتہ 26 اگست کی صبح حملہ کر دیا۔ بھارتی جموں و کشمیر کے ڈائریکٹر جنرل پولیس ایس پی وید کے مطابق اس پولیس کمپاؤنڈ پر قبضے کے لیے یہ جھڑپ کئی گھنٹوں تک جاری رہی۔ وید نے سری نگر میں صحافیوں کو بتایا کہ اب اس پولیس کیمپ پر تلاش کا عمل جاری ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز نے بھارتی زیر انتظام کشمیر کے ایک مقامی اخبار کے حوالے سے لکھا ہے کہ اس حملے کی ذمہ داری عسکریت پسند گروپ جیش محمد نے قبول کر لی ہے۔

Pilgerreise - Amarnath (Getty Images/AFP/M. Tauseef)

بھارتی سکیورٹی فورسز نے کہا ہے کہ سرحد کے آر پار فائرنگ کے تبادلے میں پاکستانی رینجرز کے تین اہلکاروں کو ہلاک کر دیا گیا ہے

گزشتہ برس ستمبر کے بعد سے بھارتی سکیورٹی فورسز کے کسی مرکز پر یہ سب سے بڑا حملہ تھا۔ ستمبر 2016 میں مسلح افراد نے لائن آف کنٹرول کے قریب اڑی میں واقع ایک فوجی کیمپ پر حملہ کر کے بھارتی فوج کے 18 اہلکاروں کو ہلاک کر دیا۔

روئٹرز کے مطابق بھارتی فوجی رواں برس اب تک 134 عسکریت پسندوں کو ہلاک کر چکی ہے۔ ان میں سے زیادہ تر کو گزشتہ دو ماہ کے دوران مارا گیا۔ گزشتہ برس بھارتی فورسز نے 150 عسکریت پسندوں کو مارا تھا۔

بھارتی حکام کے مطابق رواں برس جولائی میں قریب 79 عسکریت پسند لائن آف کنٹرول عبور کر کے بھارتی زیر انتظام کشمیر میں داخل ہوئے تھے۔

اس واقعے کے علاوہ بھارتی سکیورٹی فورسز نے کہا ہے کہ انہوں نے آج ہفتے کے روز سرحد کے آر پار فائرنگ کے تبادلے میں پاکستانی رینجرز کے تین اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

ویڈیو دیکھیے 01:14

کشمیری باغی رہنما کی تدفین میں پاکستانی پرچم لہرائے گئے

DW.COM

Audios and videos on the topic