1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کشمیری مظاہرین اور بھارتی فورسز میں شدید جھڑپیں

بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں حکّام اور عینی شاہدوں کے مطابق کشمیری مظاہرین اور حکومتی فورسز کے درمیان جھڑپوں میں کم از کم ایک شخص ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔

Pakistan Kashmir Proteste in Srinagar (picture-alliance/ZUMA Press/J. Dar)

 پولیس کے مطابق آس پاس کے گاؤں سے ہزاروں کی تعداد میں افراد گاؤں میں محصور باغیوں کی مدد کے لیے روانہ ہو گئے

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ جھڑپوں کا آغاز اُس وقت ہوا جب بھارتی فوجی اہلکاروں اور مقامی پولیس نے جنوبی گاؤں اروانی کا محاصرہ کیا جس کے بعد وہاں روپوش مبینہ عسکریت پسندوں نے محاصرہ توڑنے کی کوشش کرتے ہوئے فائرنگ شروع کر دی۔

 پولیس کا کہنا ہے کہ لڑائی میں شدت آتے ہی آس پاس کے گاؤں سے ہزاروں کی تعداد میں افراد محاصرے کے مقام سے دور رہنے کے حکومتی احکامات کو نظر انداز کرتے ہوئے گاؤں میں محصور باغیوں کی مدد کے لیے روانہ ہو گئے۔ ایک مقامی پولیس افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر  بتایا کہ مظاہرین نے لڑائی کے مقام پر دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں ارد گرد کے متعدد مقامات پر بھارتی پولیس اور مظاہرین کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں۔

 عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ بھارتی سکیورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کی اور آنسو گیس کا استعمال کیا جس کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور چالیس زخمی ہو گئے جبکہ  ایک زخمی شہری کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔ تاہم بھارتی فوجیوں اور عسکریت پسندوں کے حوالے سے کسی ہلاکت کی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔

Indien Kaschmir Indische Paramilitärs (picture-alliance/AP Photo/D. Yasin)

بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر کے جنوبی علاقوں میں بھی کشمیری مظاہرین اور بھارتی فورسز کے مابین جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں

علاوہ ازیں بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر کے جنوبی علاقوں میں بھی کشمیری مظاہرین اور بھارتی فورسز کے مابین جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ آج بروز جمعرات آٹھ دسمبر کو صبح سے ہی بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر کے جنوبی علاقوں میں مظاہرین کو بھارت مخالف مظاہرے کرنے سے روکنے کے لیے موبائل فون اور انٹر نٹ سروس بند کر دی گئی تھی۔

 بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں رواں برس جولائی سے پرتشدد مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ مظاہرے ایک علیحدگی پسند رہنما برہان وانی کی ہلاکت کے بعد شروع ہوئے تھے۔ تب سے اب تک نّوے کے قریب کشمیری مظاہرین ہلاک ہو چکے ہیں اور ہزاروں افراد زخمی ہوئے ہیں۔ 

DW.COM