1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کراچی کے لیے گرین لائن بس سروس ، منصوبے کی بنیاد رکھ دی گئی

پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف نے آج جمعے کے روز کراچی شہر کے لیے ’گرین لائن بس ریپڈ ٹرانزٹ سسٹم ‘ کا افتتاح کر دیا ہے۔ اس سہولت سے روازنہ لگ بھگ 3 لاکھ افراد مستفید ہوں گے۔

گرین لائن بس سروس کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبہ سندھ کے وزیراعلیٰ قائم علی شاہ نے اس منصوبے پر سندھ حکومت کے ساتھ تعاون کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ گرین لائن کراچی کے علاقے سرجانی سے صدر تک چلے گی۔ قائم علی شاہ نے کراچی میں امن وامان کی بہتر صورتحال کے حوالے سے بات کرتے ہوئے رینجرز اور پولیس کی کارکردگی کو بھی سراہا۔

اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف نے کہا، ’’میں نے گزشتہ برس اس منصوبے کا اعلان کیا تھا، یہ منصوبہ کراچی میں ٹرانسپورٹیشن کے حوالے سے ضروری تھا۔ گرین لائن منصوبے سے کراچی کے عوام فیض یاب ہوں گے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ جب تک کراچی کا امن بحال نہیں ہو جاتا کراچی آپریشن کو بند نہیں کیا جائے گا اور اس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

ریڈیو پاکستان کی ایک رپورٹ کے مطابق گرین لائن سرجانی ٹاؤن سے شروع ہو کر ایم اے جناح روڈ تک جائے گی اور اس سے روزانہ 3 لاکھ افراد مستفید ہوں گے۔ توقع ہے کہ یہ منصوبہ 1 سال کی مدت میں مکمل ہو جائے گا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے مزید کہا کہ کراچی پاکستان کا ایک خوبصورت شہر ہوا کرتا تھا، اگر تسلسل سے ترقیاتی کام جاری رہتا تو کراچی ایشیا کا خوبصورت شہر ہوتا۔ آج آپریشن کے ساتھ ترقیاتی عمل بھی شروع ہوچکا ہے۔ گرین بس سروس کے حوالے سے انہوں نے کہا، ’’اس منصوبے کے تحت 22 بس اسٹیشن بنائے جائیں گے، منصوبہ زمین کے اوپر 7.7 کلومیٹر، بقیہ زیر زمین ہے اور یہ مل کر 22 کلو میٹرطویل ہوگا۔‘‘

اس منصوبے کو جہاں بڑے پیمانے پر پذیرائی حاصل ہو رہی ہے وہیں کچھ افراد نے اس منصوبے کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا ہے۔

وزیراعظم نواز شریف نے جولائی سن 2014 میں اس منصوبے کا اعلان کیا تھا۔ اس منصوبے پر لگ بھگ 16.85 بلین روپے کی لاگت آئے گی اور یہ رقم وفاقی حکومت کی جانب سے فراہم کی جائے گی۔

DW.COM