1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کراچی نیول ایئربیس پر حملہ، 11 اہلکار ہلاک

کراچی میں واقع ایک نیول ائیر بیس پر دہشت گردوں کے حملے میں ہلاک ہونے والے پاکستانی سکیورٹی اہلکاروں کی تعداد 11 تک پہنچ گئی ہے۔ پاکستانی حکام کے مطابق حملہ آوروں کے خلاف آپریشن فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوگیا ہے۔

default

خبررساں ادارے اے ایف پی نے حکام کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ پاکستان بحریہ کی اس اہم بیس میں دہشت گردوں اور سکیورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں جاری ہیں۔ کراچی رینجرز اور فوج نے اس نیول فوجی اڈے کا محاصرہ کر لیا ہے۔ نیوی حکام کے مطابق دہشت گردوں کے اس حملے اور ان کے خلاف جاری کارروائی کے دوران اب تک پاکستانی سکیورٹی فورسز کے 11 اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔

پاکستانی حکام نے بتایا ہے کہ تازہ دم کمانڈوز صبح کے وقت ایئر نیول بیس میں داخل ہونے میں کامیاب ہو ئے۔ فوج نے سکیورٹی کی بنا پر اس آپریشن کی تفصیل بتانے سے انکار کیا ہے تاہم کہا گیا ہے کہ دہشت گردوں کا محاصرہ کر لیا گیا ہے اور جلد ہی انہیں پسپا کر دیا جائے گا۔

وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے اس حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کراچی حکام کو حکم دیا ہے کہ وہ اس آپریشن کے حوالے سے عسکری اور سول حکام کے ساتھ رابطہ برقرار رکھیں۔ ایسی خبریں بھی موصول ہو رہی ہیں کہ اس کارروائی کے دوران پاکستانی فوج کے گیارہ افسران ہلاک ہو چکے ہیں۔ پاکستانی وزیر داخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ دہشت گردوں کو گرفتار یا ہلاک کرنے کے لیے آپریشن جاری ہے۔

Pakistan Anschlag auf Bus in Karachi

حال ہی میں پاکستان بحریہ کی بسوں کو بھی دہشت گردی کا نشانہ بنایا گیا تھا

نیوی کے ایک کمانڈر سلمان علی نے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ گیارہ فوجی زخمی ہوئے ہیں اور ان کے سپاہی دہشت گردوں سے لڑ رہے ہیں،’ دہشت گردوں نے پاکستان بحریہ کی PNS مہران بیس پر حملہ کیا ہے۔ ان کے پاس جدید اور خودکار ہتھیار ہیں اور انہوں نے پاکستانی بحریہ کے ایک طیارے کو نشانہ بنایا ہے، جس کے نتیجے میں اسے نقصان پہنچا ہے‘۔

حملہ آوروں کی تعداد کے بارے میں متضاد خبریں موصول ہو رہی ہے۔ پاکستان نیوی کے ایک ترجمان ایئر کموڈور عرفان الحق کے مطابق حملہ آوروں کی تعداد 10 سے 15 تک ہوسکتی ہے۔ پاکستان میں طالبان باغیوں نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ دو مئی کو ایبٹ آباد میں امریکی کمانڈوز کے ایک خفیہ آپریشن کے نتیجے میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد القاعدہ نیٹ ورک نے انتقام لینے کا عہد کیا تھا۔ یہ حملہ اسی سلسلے کی ایک کڑی تصور کیا جا رہا ہے۔

پاکستان کے مقامی ٹیلی وژن چینلوں پر دکھائے جانے والے مناظر کے مطابق نیول بیس میں آگ لگی ہوئی ہے اور وہاں سے شعلے اٹھ رہے ہیں۔ دہشت گردوں کی طرف سے فائرنگ کے نتیجے میں امدادی کاموں میں مشکلات کا سامنا ہے۔ ایسی اطلاعات بھی موصول ہو رہی ہیں کہ دہشت گردوں نے بیس کےاندر موجود کچھ لوگوں کو یرغمال بنا رکھا ہے۔

رپورٹ: افسراعوان / عاطف بلوچ

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس