1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کراچی میں عرب سفارتکاروں کی گاڑی پر فائرنگ

قطر کی حکومت نے کہا ہے کہ پاکستان میں قطر کے ایک قونصل جنرل کی گاڑی پر ایک نامعلوم حملہ آور نے اتوار کے روز فائرنگ کر دی تاہم اس واقعے میں کوئی شخص ہلاک یا زخمی نہیں ہوا۔

default

کراچی میں سکیورٹی فرائض انجام دینے والے پاکستان رینجرز کا ایک اہلکار

دوحہ سے آمدہ رپورٹوں کے مطابق یہ واقعہ پاکستان کے سب سے زیادہ آبادی والے بندرگاہی شہر کراچی میں پیش آیا، جس دوران ایک شخص نے یکدم اپنی پستول سے قطری سفارت کار کی گاڑی پر فائرنگ شروع کر دی۔ بتایا گیا ہے کہ یہ بظاہر ڈکیتی کی ایک ناکام کوشش تھی۔

فائرنگ کے وقت اس گاڑی میں قطر کے قونصل جنرل کے علاوہ خلیجی ملکوں کے دو دیگر عرب سفارتکار بھی سوار تھے۔ کہا گیا ہے کہ ان سفارتکاروں میں سے ایک عمان کے قونصل جنرل اور دوسرے کراچی میں کویت کے ڈپٹی قونصل جنرل تھے۔

Pakistan Gewalt Karachi

کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات بھی بار بار دیکھنے میں آتے ہیں

قطر نیوز ایجنسی کے مطابق فائرنگ کے دوران ہی ڈرائیور یہ گاڑی وہاں سے بھگا لے جانے میں کامیاب ہو گیا۔ دوحہ میں قطر کی وزارت خارجہ نے اس بارے میں کوئی تفصیلات نہیں بتائیں تاہم اس واقعے کو مختلف خبر ایجنسیوں نے مسلح ڈکیتی کی ناکام کوشش قرار دیا ہے۔

پاکستان میں ان دنو‌ں غیر ملکی سفارتکاروں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے سکیورٹی اداروں کی طرف سے خصوصی اقدامات کیے گئے ہیں۔ اس کی وجہ پاکستان میں طالبان کی طرف سے کیے جانے والے مسلح حملے بھی ہیں اور امریکی اہلکار ریمنڈ ڈیوس کے ہاتھوں لاہور میں جنوری میں دہرے قتل کا واقعہ بھی۔

ریمنڈ ڈیوس نے، جو امریکی خفیہ ادارے CIA کا ایک کنٹریکٹ اہلکار ہے، جنوری کے آخر میں لاہور میں دو پاکستانیوں کو گولی مار دی تھی۔ اس قتل کا اعتراف کر لینے والے ڈیوس کا موقف ہے کہ اس نے یہ قتل اپنے دفاع میں کیا کیونکہ ہلاک ہونے والے دونوں شہری اسے لوٹنا چاہتے تھے۔

ریمنڈ ڈیوس کے خلاف ان دنوں لاہور میں ایک مقدمے کی سماعت جاری ہے۔ امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ڈیوس کو ایک سفارتکار ہونے کی وجہ سے اپنے خلاف عدالتی کارروائی سے استثنٰی حاصل ہے، اس لیے اسے رہا کیا جائے۔ لاہور میں امریکی قونصل خانے کے مطابق ڈیوس اس قونصل خانے کا ایک کارکن ہے۔

پاکستانی حکومت نے ابھی تک اپنی طرف سے لاہور کی متعلقہ عدالت کو حتمی طور پر یہ اطلاع نہیں دی کہ آیا ریمنڈ ڈیوس ایک سفارتکار ہے اور اسے سفارتی استثنٰی حاصل ہے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس