1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کراچی: مٹی کے تودے گرنے سے چھونپڑوں کے کم از کم 13 مکین ہلاک

پاکستان کے جنوبی صوبے سندھ کے دارالحکومت کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں مٹی کے تودے گرنے کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

کراچی پولیس اور امدادی کارکنوں کے مطابق مٹی کے تودے ایک چھوٹی پہاڑی کے قریب بنائی گئی جھگیوں پر گرے جس کے نتیجے میں کم از کم 13 افراد ان تودوں میں دھنس کر لقمہ اجل بن گئے۔

کمشنر شعیب صدیقی کے بقول یہ واقعہ کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں پیش آیا جہاں ایک چھوٹی پہاڑی کے قریب لوگوں نے جھونپڑیاں لگا رکھی تھیں اور اس کا شکار ہونے والوں میں سات بچے بھی شامل ہیں۔ کراچی میں قائم فلاحی امدادی تنظیم ایدھی فاؤنڈیشن کے اعلیٰ اہلکار انور کاظمی نے خبر رساں ایجنسی ڈی پی اے کو بتایا، ’’ہم تک 13 لاشیں پہنچی ہیں۔ ہم انہیں صوبہ پنجاب میں ان کے آبائی علاقوں تک بھیجنے کا بندو بست کر رہے ہیں‘‘۔

Erdrutsch in Pakistan

ہلاک ہونے والوں میں سات بچے بھی شامل ہیں

مٹی کے تودے گرنے کے اس واقعے میں مزید 10 افراد کے زخمی ہونے کی بھی اطلاع ہے۔ اس واقعے میں بچ جانے والے ایک بچے نے جیو ٹی وی کو بیان دیتے ہوئے بتایا کہ جس وقت مٹی کے تودے اُن کی جھونپڑی پر گرے اُس وقت وہ سب سُو رہے تھے۔ اُس کا کہنا تھا،’’ میری آنکھ چیخ و پُکار کی آواز سے کھُلی۔ جب میں نیند سے بیدار ہوا تو میں نے دیکھا کہ میری پوری فیملی مٹی کے تودوں تلے دب چُکی تھی۔ میں مدد کے لیے چیخ رہا تھا مگر میں نےدیکھا کہ ہمارے برابر والی جھگی، جس میں میرے چاچا کی فیملی رہتی تھی وہ بھی تودوں میں دفن ہو چُکی ہے‘‘۔

Erdrutsch in Pakistan

مٹی کے تودے جھونپڑیوں پر گرے

مقامی ٹیلی وژن پر دکھائی جانے والی فوُٹیج میں اس ناگہانی آفت کا شکار ہونے والوں کے روز مرہ استعمال کی اشیاء کو بھی مٹی کے تودوں میں دفن دیکھا جا سکتا تھا جبکہ ان تودوں میں سے لاشوں کو نکالنے کا کام امدادی کارکن انجام دیتے دکھائی دیے۔

پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نے اس سانحے پر افسوس کا ظہار کرتے ہوئے متعلقہ حکام سے حادثے کے شکار افراد کے لواحقین کو ضروری امداد کی فراہمی کے احکامات جاری کیے ہیں۔