1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

کامن ویلتھ گیمز میں مبینہ بدعنوانی: سریش کلماڈی بول پڑے

بھارت میں منعقد ہوئی کامن ویلتھ گیمز کی انتظامی کمیٹی کے منتظم اعلیٰ سریش کلماڈی نے کہا ہے کہ کھیلوں کے دوران مبینہ بدعنوانیوں کی تحقیقات جانبدارطریقے سے ہوئیں ہیں۔

default

سریش کلماڈی

انہی الزامات کے نتیجے میں کلماڈی کو ان کے عہدے سے برطرف جبکہ ان کے دو ساتھیوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ جمعرات کو جاری کی گئی ایک پریس ریلیزمیں سریش کلماڈی نے شکایت کی ہے کہ دولت مشترکہ کھیلوں میں مبینہ بدعنوانیوں کی تحقیقات کا مرکز ان کی انتطامی کمیٹی ہے جبکہ تمام تر فیصلوں میں حکومتی افسران بھی شامل تھے، جنہیں مکمل چھوٹ دی جا رہی ہے۔

Flash Galerie Suresh Kalmadi

سریش کلماڈی کی مشکلات میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے

کلماڈی نے کہا کہ تحقیقاتی ادارہ سی بی آئی اس حقیقت کو نظر انداز کر رہا ہے کہ ان کھیلوں کے حوالے سے فیصلے مختلف سطحوں پر کیے گئے تھے،’بظاہر ان حکومتی افسران سے کوئی پوچھ گچھ نہیں کی جا رہی ہے، جو ان کھیلوں کے انعقاد کا ایک حصہ تھے۔‘ انہوں نے کہا کہ دولت مشترکہ کھیلوں کی منصوبہ بندی کے سلسلے میں کھیلوں کی وزرات ہر مرحلے میں ساتھ تھی۔

سریش کلماڈی کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے، جب سی بی آئی نے مبینہ مالی بے ضابطگیوں کے الزام میں انتظامی کمیٹی کے ڈائریکٹر جنرل وی کے ورما اور ان کے سکیریٹری للت بھانوٹ کو گرفتار کیا ہے۔ تاہم ان دونوں افراد نے ان الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔

کھیلوں کے وزیر نے گزشتہ ماہ سریش کلماڈی اور ان کی ٹیم کے کئی اعلیٰ اہلکاروں کو ان کے عہدوں سے بر طرف کر دیا تھا تاکہ ان پر لگائے جانے والے الزامات کی تحقیقات شفاف طریقے سے ہو سکیں۔

دوسری طرف بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ نے کہا ہے کہ کامن ویلتھ گیمز میں بدعنوانی کے مرتکب افراد کے خلاف سخت ترین قانونی کارروائی کی جائے گی۔ جمعرات کو انہوں نے پارلیمان سے خطاب کرتے ہوئے کہا،’حتیٰ کہ کھیلوں کے اختتام سے قبل ہی شکایات موصول ہوئی تھیں۔۔۔ اگر اس حوالے سے کوئی قصوروار ثابت ہوا، تو اس کو کوئی رعایت نہیں دی جائے گی۔‘

رپورٹ: عاطف بلوچ

ادارت: عاطف توقیر

DW.COM