1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کاز ساز کمپنيوں کو اعتماد بحال کرنا پڑے گا، انگيلا ميرکل

جرمن چانسلر انگيلا ميرکل نے عالمی شہرت يافتہ فرينکفرٹ انٹرنيشنل موٹر شو کا افتتاح کرتے ہوئے جرمن گاڑيوں کی صنعت کی اہميت پر بھی بات کی اور چند حاليہ اسکينڈلز کے تناظر ميں متعلقہ کار ساز کمپنيوں پر تنقيند بھی کی۔

جرمن چانسلر انگيلا ميرکل نے کہا ہے کہ جرمنی کی معروف کار ساز کمپنيوں کو صارفين ميں اپنا کھويا ہوا اعتماد بحال کرنا ہو گا۔ انہوں نے يہ بيان فرينکفرٹ انٹرنيشنل موٹر شو کے افتتاح کے موقع پر آج 14ستمبر کو ديا۔ ميرکل نے يہ بيان چند بڑی جرمن کار ساز کمپنيوں کی گاڑيوں ميں دھوئيں کے اخراج سے متعلق پچھلے چند سالوں ميں سامنے آنے والے اسکينڈلز کے تناظر ميں ديا۔

جرمنی ميں چوبيس ستمبر کو عام انتخابات ہو رہے ہيں۔ گاڑيوں کی پيداوار سے متعلق صنعت حاليہ چند اسکينڈلز کے سبب اس بار اليکشن ميں اہم موضوع بنی ہوئی ہے۔ اس صنعت کے حوالے سے نرم رويہ رکھنے کے سبب چانسلر ميرکل کو ايک موقع پر ’کار چانسلر‘ کے نام سے بھی مخاطب کيا جاتا رہا ہے۔

تاہم حاليہ عرصے ميں انہوں نے بڑی کار ساز کمپنيوں کے سربراہان کے بارے ميں سخت بيانات بھی ديے ہيں۔ جرمن شہر فرينکفرٹ ميں آئی اے اے کے افتتاح کے موقع پر انہوں نے کہا، ’’آٹو انڈسٹری بڑے پيمانے پر ريگوليشن ميں موجود خاميوں کا فائدہ اٹھاتی آئی ہے۔ اس سے نہ صرف اس صنعت کی ساکھ متاثر ہوئی ہے بلکہ اس سے صارفين بھی مايوس ہوئے ہيں۔‘‘

اسکينڈلز کے تناظر ميں تنقيد کے ساتھ ساتھ چانسلر ميرکل نے البتہ اس صنعت کی اہميت پر بھی بات کی۔ انہوں نے کار ساز کمپنيوں کی صنعت کو جرمن برآمدات کے ليے ايک اہم صنعت قرار ديا، جس سے تقريباً نو لاکھ افراد کی روزی روٹی منسلک ہے۔ ان کے بقول اس صنعت کو کھويا ہوا اعتماد بحال کرنا پڑے گا۔

جرمنی ميں ڈيزل گيٹ کا اسکينڈل سن 2015 ميں اس وقت منظر عام آيا تھا، جب اس سال کا فرينکفرٹ انٹرنيشنل موٹر شو جاری تھا۔ فوکس ويگن نامی جرمن کمپنی نے يہ اعتراف کيا تھا کہ گاڑيوں سے دھوئيں کے اخراج کو کم دکھانے کے ليے کمپنی نے گيارہ ملين گاڑيوں میں ايسا سافٹ ويئر لگايا تھا جو اس مقصد کے ليے کام آتا تھا۔

DW.COM