1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کارگل آپریشن پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا گیا:جنرل ریٹائرڈجمشیدگلزار کیانی

سابق کور کمانڈر نےمشرف کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا مواخذہ ہونا چاہیے اور ان کے خلاف مقدمہ چلانا چاہیے۔ دوسری طرف نواز شریف نے مطالبہ کیا ہے کہ کارگل آپریشن کی از سر نو تحقیقات ہونی چاہیئں۔

default

ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل اور راولپنڈی کے سابق کورکمانڈرجمشید گلزار کیانی نے کہا ہے کہ صدر مشرف نے اعلی فوجی افسران کے مشوروں پر عمل نہیں کیا جس کی وجہ سے وہ عوام میں نہایت غیر مقبول ہو گئے ہیں۔

انہوں نے گیارہ سنمبر کے بعد صدر مشرف کے تقریبا تمام اقدامات کو ہی ہدف تنقید بنایا۔ جمشید کیانی نے صدر مشرف کی طرف سے کئے گئے اقدامات بشمول آپریشن، لعل مسجد سائلنس آپریشن، تین نومبر کی ایمرجنسی، ججوں کی معزولی اور لاپتہ افراد کے کیس پر انہیں مورد الزام تھہراتے ہوئے مطالبہ کیا کہ مشرف کو صدر کے عہدے سے مستعفی ہو جانا چاہیے۔

Rote Moschee in Islamabad

لعل مسجد میں پاکستانی فوج کا جوان

ڈویچے ویلے سے گفتگو کرتے ہوئے معروف سیکورٹی تجزیہ نگار اورسابق اعلی فوجی افسر طلعت مسعود نے کہا کہ اگرچہ ملک کے تمام اہم فیصلے فوج ہی کرتی ہے لیکن اس سسٹم میں اب تبدیلی کی ضرورت آگئی ہے۔

طلعت مسعود نے کہا کہ اس وقت صدر مشرف پر دباؤ میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور اگر پارلیمان کی بالادستی قائم نہیں ہوتی اور پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ کے مابین اختلافات میں خلیچ بڑھتی ہے اور ان میں پھوٹ پڑتی ہے تو صورتحال مزید خراب ہو سکتی ہے۔