1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کابل میں نیٹو قافلے پر خود کش حملہ، آٹھ ہلاک

افغان دارالحکومت کابل میں آج صبح ہونے والے ایک خود کش حملے میں کم از کم آٹھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ اس حملے کا ہدف امریکی فوجی تھے۔

افغانستان میں تعینات نیٹو فورسز کے ترجمان امریکی نیوی کیپٹن بِل سالوِن کے مطابق اس کار بم حملے کا نشانہ مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کا ایک قافلہ تھا۔ ان کے بقول اس واقعے میں ہلاک ہونے والے تمام افغان شہری ہیں۔ سالون نے مزید بتایا کہ زخمیوں میں تین امریکی اہلکار بھی شامل ہیں۔ اس حملے میں نیٹو کی دو بکتر بند گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔

حکام کے مطابق اس حملے میں 28 افراد زخمی بھی ہوئے۔ یہ حملہ کابل کے ایک مصروف علاقے میں آج بدھ تین مئی کو صبح کے اوقات میں کیا گیا۔ افغان وزارت داخلہ کے نائب ترجمان نجیب دانش نے بتایا یہ واقعہ کابل میں امریکی سفارت خانے کے قریب واقع مسعود اسکوائر پر پیش آیا۔ اسی علاقے میں افغان سپریم کورٹ کی عمارت  اور کئی وزارتوں کے دفاتر بھی واقع ہے۔ نجیب دانش نے ہلاکتوں کی تعداد کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ دھماکے کی نوعیت جاننے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

ابھی تک کسی بھی تنظیم نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ تاہم طالبان کی طرف سے چند روز قبل ہی موسم بہار کے حملے شروع کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔ طالبان نے ان حملوں کو اپنے سابق رہنما ملا اختر منصور کے حوالے سے ’’آپریشن منصوری‘‘ کا نام دیا ہے۔ طالبان نے کہا تھا کہ ان حملوں میں افغان فورسز کے علاوہ غیر ملکی فورسز اور ان کی تنصیبات کو بھی نشانہ بنایا جائے گا۔