1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

کابل میں خود کش بمباروں کا حملہ، کل 12 افراد ہلاک

افغان دارالحکومت کابل کے پرانے حصے میں میں آج ہفتہ کو تین خود کش بمباروں نے ایک پولیس کمپاؤنڈ پر حملہ کر دیا، جس میں مجموعی طور پر بارہ افراد ہلاک ہو گئے۔

default

کابل سے ملنے والی رپورٹوں کے مطابق افغان وزارت داخلہ کے ایک ترجمان نے صحافیوں کو بتایا کہ یہ مسلح کارروائی تین طالبان حملہ آوروں نے کی۔ ان میں سے ایک نے خود کو اس پولیس کمپاؤنڈ کے دروازے پر دھماکے سے اڑا دیا تاکہ اس کے ساتھی اس کمپاؤنڈ میں داخل ہوسکیں۔

صدیق صدیقی نامی ترجمان کے بقول ایک حملہ آور کو وہاں موجود پولیس اہلکاروں نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ پھر آخری حملہ آور کے ساتھ وہاں موجود سکیورٹی دستوں کا فائرنگ کا تبادلہ شروع ہو گیا۔ تازہ ترین خبروں کے مطابق بعد میں اس آخری خود کش حملہ آور نے بھی خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔

Afghanistan 8000 Tote im vergangenen Jahr

کابل میں حالیہ ہفتوں کے دوران دو خود کش حملے کیے گئے

عینی شاہدین کے مطابق اس حملے میں عمارت کے باہر زخمی ہو جانے والے ایک پولیس اہلکار کو اس کے ساتھیوں نے فوری طور پر ہسپتال پہنچا دیا۔ کمپاؤنڈ کے باہر موجود بھاری ہتھیاروں سے مسلح کئی پولیس اہلکار اس عمارت کی طرف فائرنگ کرتے دیکھے گئے۔

NATO Soldaten in Afghanistan

نیٹو کی کارروائیاں بھی عسکریت پسندوں کے خلاف جاری ہیں

عبدالواحد نامی ایک عینی شاہد نے خبر ایجنسی روئٹرز کو بتایا کہ اس حملے کے دوران تین دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں تاہم کافی دیر تک صورت حال بہت غیر واضح تھی۔ اس حملے اور اس کے بعد شروع ہونے والے فائرنگ کے تبادلے کے دوران پولیس کمپاؤنڈ کے ارد گرد کی سڑکیں بالکل سنسان ہو گئیں۔ عام طور پر وہاں خریداروں اور سٹالوں پر مختلف چیزیں بیچنے والوں کا بڑا ہجوم رہتا ہے۔

کابل سے ملنے والی خبر ایجنسی روئٹرز کی تازہ ترین رپورٹوں کے مطابق آج کے حملے میں مجموعی طور پر بارہ افراد ہلاک ہوئے۔ وزارت داخلہ کے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا کہ ان میں سے تین خود کش حملہ آور تھے، تین پولیس اہلکار، ایک ملکی خفیہ ادارے کا ایجنٹ اور کم از کم پانچ عام شہری۔ اس کے علاوہ دو پولیس اہلکار اور دس شہری زخمی بھی ہو گئے۔

Bundeswehrsoldat bei Anschlag in Kabul getötet

آج کا حملہ کابل میں حالیہ ہفتوں کے دوران کیا جانے والا دوسرا خود کش حملہ ہے۔ اکیس مئی کو کابل کے بہت سخت حفاظتی انتظامات والے ایک علاقے میں ایک فوجی ہسپتال پر کیے جانے والے ایک خود کش حملے میں چھ افراد ہلاک اور 23 زخمی ہو گئے تھے۔

افغانستان میں آج کل ملکی فوج اور نیشنل پولیس کے علاوہ قریب ڈیڑھ لاکھ غیر ملکی فوجیوں کی موجودگی کے باوجود باغیوں کے مسلح حملوں کی وجہ سے سلامتی کی صورت حال اتنی خراب ہے، جتنی پچھلے دس سال میں نہیں تھی۔ افغانستان میں طالبان حکومت کا خاتمہ سن 2001 میں امریکہ کی فوجی حمایت سے افغان قوتوں کے ہاتھوں ہوا تھا۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: امجد علی

DW.COM

ویب لنکس