1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ڈھاکہ میں عام ہڑتال، مظاہرین پرلاٹھی چارج

بنگلہ دیشی دارالحکومت ڈھاکہ میں آج اتوار کو عام ہڑتال کے دوران دوران پولیس نے اپوزیشن کے کارکنوں پر لاٹھی چارج کرنے کےعلاوہ آنسو گیس کا استعمال بھی کیا۔ سیاسی کارکنوں کے مطابق اس لاٹھی چارج میں آٹھ افراد زخمی بھی ہوئے۔

default

بنگلہ دیش میں ہڑتال بنگلہ دیش نیشنلیسٹ پارٹی کی طرف سے کی گئی ہے۔ اپوزیشن جماعت BNP کی سربراہ سابق وزیراعظم خالدہ ضیاء ہیں۔ مظاہرین حکومت کے اس فیصلے کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں کہ ملکی دارالحکومت ڈھاکہ کو دو انتظامی علاقوں میں تقسیم کر دیا جائے۔ BNP کا دعویٰ ہے کہ شیخ حسینہ کی حکومت نے یہ منصوبہ اس لیے تیار کیا ہے کہ ڈھاکہ میں اپوزیشن کے حمایت یافتہ میئر کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا جائے۔

وزیراعظم شیخ حسینہ جو خالدہ ضیاء کی سب سے بڑی سیاسی حریف ہیں کہتی ہیں کہ ڈھاکہ شہر کی دوانتظامی حصوں میں تقسیم اس لیے ضروری ہے کہ شہریوں کو دستیاب سہولتوں کی فراہمی میں اضافہ کیا جا سکے۔

Prosteste in Dhaka Bangladesch

ڈھاکہ شہر کی انتظامی تقسیم پر ہڑتال کا اعلان کیا گیا تھا

ڈھاکہ پندرہ ملین کی آبادی والا ایک ایسا شہر ہے کہ جہاں بنیادی ڈھانچے کی حالت انتہائی خراب ہے۔ ڈھاکہ شہر کی دو انتظامی حصوں میں مجوزہ تقسیم کے خلاف اپوزیشن کے احتجاج کے باوجود ملکی حکومت نے منگل کے روز پارلیمان میں ایک نیا قانون بھی منظور کروا لیا۔ اس قانون کے تحت شہر کے دونوں حصوں میں منتظمین کی تقرری کا راستہ کھلا رکھا گیا ہے۔

اس چار سو سالہ پرانے شہر ڈھاکہ میں آج دن بھر کے دوران عام ہڑتال کے موقع پر تمام اسکول اور کاروباری ادارے بند رہے۔ سڑکوں پر ٹریفک نہ ہونے کے برابر رہی۔ ڈھاکہ میں مظاہرین پر پولیس کے لاٹھی چارج کے بارے میں اپوزیشن BNP کے ایک اعلی عہدے دار فخر الاسلام عالمگیر نے کہا کہ پولیس کی کارروائی کے نتیجے میں کم ازکم آٹھ مظاہرین زخمی ہو گئے۔ ان کے مطابق یہ زخمی کارکن زیرعلاج ہیں۔ فخر الاسلام کے مطابق آج کی عام ہڑتال سے پہلے کل رات ڈھاکہ سے اپوزیشن کے کم ازکم پچاسی کارکنوں کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔ بنگلہ دیشی دارالحکومت میں امن عامہ کو یقینی بنانے کے لیے آج قریب کم ازکم تیرہ ہزار سکیورٹی اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ عوامی سلامتی کو ہر حال میں یقینی بنایا جائے گا۔ یہ رپورٹیں بھی ملی ہیں کہ اتوار کی ہڑتال کے موقع پر اپوزیشن اور حکومت کےحامی سیاسی کارکنوں کے مابین تصادم بھی ہوا جس میں متعدد افراد زخمی ہو گئے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: عابد حسین

DW.COM

ویب لنکس