1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

مہاجرین کا بحران

ڈنمارک جرمن سرحد پر شناختی دستاویزات کی جانچ جاری رکھے گا

ڈنمارک نے پیر کے روز سے جرمن سرحد پر سفری دستاویزات کی جانچ پڑتال کا کام جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ سرحدی کنٹرول کی مدت میں توسیع کر کے اسے دو جون تک نافذالعمل رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

ڈنمارک کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اس بارڈر کنٹرول کے نفاذ کا مقصد مہاجرین کی ’غیرمعمولی تعداد‘ کو ملک میں داخلے سے روکنا ہے۔

ڈنمارک کی وزیرداخلہ اِنگر اسٹوجبرگ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے، ’’اب بھی یورپی سرحدوں پر مہاجرین اور سیاسی پناہ کے متلاشی افراد کا بہت دباؤ ہے۔ یہ افراد بند سرحدوں کے تناظر میں متبادل راستوں سے یورپ پہنچ رہے ہیں۔‘‘

ان کا مزید کہنا تھا، ’’جب سیاسی پناہ کے متلاشی بغیر کاغذات کے سویڈن میں داخل نہیں ہو سکتے، تو وہ ڈنمارک میں پھنس کر رہ جاتے ہیں اور ہمارے ملک کی سلامتی کے لیے خطرات پیدا کر سکتے ہیں۔‘‘

Schweden Dänemark Grenze Flüchtlinge

سویڈن ڈنمارک کی سرحد پر شناختی دستاویزات کی جانچ کا نظام نافذ کیے ہوئے ہے

ڈنمارک پہلے ہی سے جرمن سرحد پر سفری کاغذات کی جانچ پڑتال کا عمل جاری رکھے ہوئے ہے اور اب تک تین مرتبہ اس کی مدت میں توسیع کر چکا ہے۔ 4 جنوری کو ڈنمارک نے جرمن سرحد پر سفری کاغذات کی جانچ پڑتال کا عمل اس وقت شروع کیا تھا، جب سویڈن نے ڈنمارک سے بسوں یا کشتیوں کے ذریعے سویڈش علاقوں میں داخل ہونے والوں سے شناختی دستاویزات دکھانے کی شرط نافذ کر دی تھی۔

گزشتہ برس ڈنمارک ایک راستے کی طرح رہا، جسے جرمنی سے سویڈن پہنچنے والے افراد نے استعمال کیا۔ یورپی یونین میں سیاسی پناہ کے متلاشی افراد کے لیے سویڈن سب سے آسان طریقہء کار کا حامل رہا ہے۔ سویڈن میں گزشتہ برس ایک لاکھ 63 ہزار افراد نے سیاسی پناہ کی درخواستیں جمع کرائیں۔