1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

چین میں زبردست عسکری پریڈ

چین میں پیپلز لبریشن آرمی کی 90ویں سال گرہ کے تناظر میں ایک بہت بڑی عسکری پریڈ کا انعقاد کیا گیا۔ اس پریڈ کا ایک مقصد عسکری قوت کا مظاہرہ کرنا بھی تھا۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق اتوار کے روز چین میں ہونے والی اس عسکری پریڈ کو براہ راست ریاستی ٹی وی چینل پر دکھایا گیا جب کہ خود صدر شی جن پنگ بھی فوجی وردی میں اس پریڈ میں شریک ہوئے۔ انہوں نے ایک جیپ کے ذریعے فوجی دستوں کا معائنہ کیا۔

بتایا گیا ہے کہ اس عسکری پریڈ میں 12 ہزار فوجیوں کے ساتھ ساتھ پانچ سو گاڑیاں بھی شامل ہوئیں۔ اس موقع پر فوجی ترانے بھی بجائے گئے جب کہ پریڈ میں لڑاکا طیاروں کے ساتھ ساتھ دور فاصلے تک مار کی صلاحیت کے حامل میزائل بھی شامل کیے گئے تھے۔ صدر شی جن پنگ نے عسکری پریڈ کی تقریب سے خطاب میں کہا کہ چین کو ایک زبردست فوج کی ضرورت ہے۔

China Militärparade Xi Jinping (picture-alliance/AP Photo/CCTV)

چینی صدر نے کہا کہ پیپلز لبریشن آرمی ہر حملہ آور کو شکست دے سکتی ہے

شی جن پنگ بہ طور صدر سینٹرل ملٹری کمیشن کے چیرمین بھی ہیں اور پیپلز لبریشن آرمی کے سربراہ بھی۔ شی جن پنگ ماضی میں بھی اس ’چینی خواب‘ کا ذکر کرتے آئے ہیں، جس کی تعبیر ان کی نگاہ میں عالمی امور میں قائدانہ کردار اور جدید ترین اور طاقتور فوج میں مضمر ہے۔

مبصرین کے مطابق چین کے منگولیا ریجن میں رُریہے فوجی تربیتی اڈے میں اس فوجی پریڈ کے انعقاد کا مقصد شی جن پنگ کی جانب سے یہ باور کروانا بھی ہے کہ وہ پیپلز لبریشن آرمی پر کس قدر مضبوط گرفت رکھتے ہیں۔ رواں برس موسم خزاں میں چین کی کمیونیسٹ پارٹی کی کانگریس کا انعقاد بھی ہونا ہے اور اس تناظر میں شی جن پنگ اپنی مضبوط پوزیشن کا اظہار کرتے دکھائے دیتے ہیں۔

اپنے خطاب میں شی جن پنگ نے کہا کہ پیپلز لبریشن آرمی کسی بھی حملہ آور کو شکست دینے کی صلاحیت کی حامل ہے، ’’ہمیں ضرورت ہے کہ ہم عوامی فوج کو تاریخ کے کسی بھی موقع کے مقابلے میں آج زیادہ مضبوط تر بنا دیں۔‘‘ واضح رہے کہ چین کی پیپلز لبریشن آرمی منگل کے روز اپنی 90ویں سال گرہ منائے گی۔