1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

چین جی ٹوئنٹی کے ساتھ قریبی تعلق رکھے، کیمرون

برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے چین پر زور دیا ہے کہ وہ جی ٹوئنٹی گروپ کے ساتھ قریبی تعلق رکھے اور اپنے ہاں وسیع تر سیاسی آزادی کا نظام متعارف کرائے۔ انہوں نے یہ باتیں بدھ کو اپنے دورہ چین کے آخری روز کہیں۔

default

ڈیوڈ کیمرون پیکنگ یونیورسٹی میں خطاب کر رہے ہیں

برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون ایک ٹریڈ مشن کے ساتھ چین پہنچے تھے، تاہم ان کے اس دو روزہ دورے پر چین میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا موضوع حاوی رہا۔

بدھ کو اپنے دورے کے آخری روز پیکنگ یونیورسٹی میں خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ تجارت کے تناظر میں جی ٹوئنٹی کے ساتھ چین کا تعاون اور کرنسی کے معاملات عالمی اقتصادیات کے استحکام کے لئے طویل المدتی کردار ادا کریں گے۔ تاہم انہوں نے دنیا کے ایک حصے سے دوسرے کی جانب بڑھتے ہوئے ’پیسے کے خطرناک بحران’ پر خبردار بھی کیا۔

کیمرون نے کہا، ’اگر چین اپنی منڈیوں تک مزید رسائی دینے اور برطانیہ اور جی ٹوئنٹی کے دیگر رکن ممالک کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لئے تیار ہوتا ہے، تاکہ عالمی معیشت کو پھر سے کھڑا کیا جا سکے، ساتھ ہی اگر وہ اپنی کرنسی کو بین الاقوامی بنانے کی جانب بھی قدم بڑھاتا ہے تو اس سے عالمی معیشت کو دُوررس فوائد حاصل ہوں گے۔’

ڈیوڈ کیمرون نے یہ تقریر جی ٹوئنٹی کے خصوصی اجلاس سے ایک روز قبل کی ہے، جو جمعرات سے جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول میں شروع ہو رہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ کرنسی وار اور امریکہ اور چین کے درمیان تجارتی عدم توازن اس اجلاس کا اہم موضوع رہے گا۔

Cameron Hu Jintao China Halle des Volkes

ڈیوڈ کیمرون اور ہوجنتاؤ

دوسری جانب یہ خیال بھی کیا جاتا ہے کہ برطانوی وزیر اعظم نے اپنے چینی ہم منصب وین جیاباؤ کے ساتھ ملاقات میں حکومت مخالف شہری اور نوبل امن انعام یافتہ لیو ژیاؤبو کا معاملہ بھی اٹھایا ہے، جو وہاں قید میں ہیں۔ انہوں نے وہاں انسانی حقوق کے تناظر میں زیادہ سے زیادہ سیاسی آزادی پر بھی زور دیا ہے۔

لیوژیاؤبو کے لئے نوبل امن انعام کا اعلان گزشتہ ماہ کیا گیا تھا، جس کے بعد ڈیوڈ کیمرون چین کا دورہ کرنے والے پہلے عالمی رہنما ہیں۔ انہوں نے دو روز وہاں قیام کیا اور اس دوران ان پر مسلسل یہ دباؤ رہا کہ وہ بیجنگ حکام کے ساتھ بات چیت میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر کھل کر احتجاج کریں۔

پیکنگ یونیورسٹی میں تقریر چین میں ان کی آخری مصروفیت تھی جبکہ اس سے قبل بدھ کو انہوں نے چینی صدر ہو جنتاؤ سے ملاقات کی اور دیوارِ چین کا دورہ بھی کیا۔ بعدازاں وہ جی ٹوئنٹی کے اجلاس میں شرکت کے لئے سیول روانہ ہو گئے۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: کشور مصطفیٰ

DW.COM

ویب لنکس