1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

چین تاریخی کساد بازاری کا شکار رہے گا: چینی وزیر اعظم

چینی وزیر اعظم وین جیا باؤ نے پارلیمان سے خطاب میں کہا ہے کہ سال 2009 میں چین تاریخی کساد بازی کا شکار رہے گا۔ چینی وزیر اعظم نے کہا ہےکہ صنعتوں اور معیشت کے استحکام کے لئے 585 بلین ڈالر کا امدادی پیکیج مطلوب ہوگا۔

default

وین جیا باؤ چینی کانگریس سے خطاب کے دوران

وین جیا باؤ نے چین کی قومی عوامی کانگریس سے اپنے خطاب میں رواں برس کو گزشتہ سو برسوں میں کساد بازاری کے لحاظ سے سب سے زیادہ تباہ کن سال قرار دیا ہے۔ جیا باؤ نے کہا ہے کہ مالیاتی پیکیج سے چینی معیشت کو استحکام دینے کی کوشش کی جائے گی۔ چینی کانگریس سے خطاب میں انہوں نے ملکی شرح نمو کا رواں سال کے لئےہدف 8 فیصد مقرر کیا۔

Premierminister wen spricht vor dem Volkskongress

چینی وزیر اعظم نے عوامی کانگریس سے خطاب میں اس امید کا اظہار کیا کہ کساد بازاری کے باوجود حکومت 90 لاکھ نئی آسامیاں پیدا کرنے میں کامیاب رہے گی اور مقامی حکومتوں کے بجٹ میں 25 فیصد اضافہ کیا جائے گا۔

چینی وزیر اعظم نے کہا’’ چین، ایک ارب 30 کروڑ آبادی کا ملک ہے اور اس کی معیشت، شرح نمو میں استحکام، شہری و دیہی عوام کے لئے ملازمتوں کے نئے مواقع اور ان کی آمدنی میں اضافے کا رجحان برقرار رہنا، سماجی تحفظ کے لئے انتہائی ضروری ہے۔‘‘

Volkskongress China Wen Jiabao

ویں جیا باؤ نے کہا کہ چین عالمی مالیاتی بحران سے متاثر ہوا ہے تاہم اس کے اثرات سے عوام کو بچانے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے سماجی تحفظ اور صحت عامہ کی صورت حال کو کسی صورت بھی اس مالیاتی بحران سے متاثر نہیں ہونے دیا جائے گا۔

بیجنگ حکومت کو خدشات ہیں کہ اگر ملک کی سالانہ شرح نمو آٹھ فیصد سے کم ہوئی تو اس سے معاشرے عدم استحکام پیدا ہو سکتا ہے۔ بیجنگ کی کمیونسٹ حکومت کو یہ خدشات بھی لاحق ہیں کہ اگر عوام کو روزگار کے مواقع میں کمی دکھائی دی تو یقینا کمیونسٹ پارٹی کی برسراقتدار رہنے پر بھی سوالات اٹھنا شروع ہو جائیں گے۔ شاید یہی وجہ ہے کہ کثیر سرمایے کے امدادی پیکیج سے اقتصادی استحکام کی کوشش کی جارہی ہے۔