1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پی پی پی، اے این پی اختلافات: گیلانی پشاور میں

پاکستانی صوبہ سرحد کی مخلوط حکومت میں عوامی نیشنل پارٹی اور پاکستان پیپلز پارٹی شامل ہیں۔ دونوں پارٹیوں کے مابین کافی اختلافات بھی پائے جاتے ہیں جن کے خاتمے کی کوششوں کے لئے وزیر اعظم گیلانی پیر کے روز پشاور پہنچ گئے۔

default

پاکستانی وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی

پشاور کی صوبائی حکومت میں شامل اے این پی اور پی پی پی کو ایک دوسرے سے شکایت یہ ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے بقول عوامی نیشنل پارٹی شمال مغربی سرحدی صوبے میں حکومت کرتے ہوئے اقربا پروری کی مرتکب ہو رہی ہے اور مختلف شعبوں میں خالی آسامیوں پر بھرتی کے عمل میں اے این پی کے کارکنوں کو اس طرح ترجیح دی جا رہی ہے کہ یوں ’’پیپلز پارٹی کے کارکنوں کی حق تلفی‘‘ ہو رہی ہے۔

پشاور کی صوبائی کابینہ میں پیپلز پارٹی کو عوامی نیشنل پارٹی سے صرف یہی شکایت نہیں ہے۔ اے این پی سے پی پی پی کو یہ شکایت بھی ہے کہ صوبائی کابینہ میں مختلف فیصلے کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے وزراء سے یا تو رائے لی نہیں جاتی یا پھر ان کی رائے کو اہمیت نہیں دی جاتی۔ پشاور میں پیپلزپارٹی کے صوبائی عہدیداروں کے بقول یوں "عوامی نیشنل پارٹی مخلوط حکومتی اخلاقیات کی پاسداری میں ناکام رہی ہے۔"

کیا پشاور میں اے این پی اور پیپلز پارٹی کی ایک دوسرے کے ساتھ اقتدار میں شراکت داری کے باوجود اختلافات اتنے شدید ہیں کہ ان کے خاتمے کی کوششوں کے لئے ملکی وزیر اعظم کو ثالثی کے لئے خود پشاور جانا پڑے؟ اس بارے میں شعبہ اردو کی طرف سے عصمت جبیں نے پشاور میں معروف صحافی رحیم اللہ یوسف زئی کے ساتھ گفتگو میں ان سے دریافت کیا کہ صوبہ سرحد میں پیپلز پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی کے مابین اختلافات کی نوعیت کیا ہے؟

عصمت جبیں کا رحیم اللہ یوسف زئی کے ساتھ انٹرویو سننے کے لئے نیچے دئے گئے آڈیو لنک ہر کلک کریں۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

Audios and videos on the topic