پی آئی اے کے جہاز میں بلی، پرواز روک دی گئی | معاشرہ | DW | 22.12.2017
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

پی آئی اے کے جہاز میں بلی، پرواز روک دی گئی

پی آئی اے کے ایک جہاز کو کراچی ائیرپورٹ کے رن وے پر سکیورٹی افواج نے اس وقت گھیرے میں لے لیا جب پائلٹ نے جہاز میں بلی کی موجودگی کی وجہ سے اُسے رن وے سے واپس موڑ لیا۔

نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹ کے مطابق یہ جہاز کراچی سے گوادر پرواز کرنے کے لیے جانے والا تھا۔ پائلٹ جب اِس ہوائی جہاز کو رن وے پر لے کر پہنچا تو اُس نے کنٹرول ٹاور کو خطرے کا سگنل دے دیا۔ پائلٹ نے ہوائی جہاز کو واپس موڑ  دیا۔

 اس سگنل کے بعد اور واپسی پر فائر بریگیڈز اور پولیس کی گاڑیوں نے جہاز کو اپنے حصار میں لے لیا۔ پاکستان کے ٹی وی چینل، جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے پی آئی سے کے ترجمان مشہود تاجور نے کہا،’’  یہ بات غیر معمولی نہیں ہے، جب جہاز کا پائلٹ’خطرے‘ کا سگنل دے تو ائیر پورٹ کی پولیس اور فائر ڈیپارٹمنٹ کی گاڑیاں جہاز کو گھیرے میں لے لیتی ہیں۔

gähnende Katze (picture-alliance/picturedesk.com/H. Ringhofer)

کافی کوششوں  کے بعد بالآخر بلی پکڑی گئی

ڈی پی اے کی رپورٹ کے مطابق اس جہاز کے کاک پٹ میں ایک بلی کی موجودگی پر پائلٹ نے خطرے کا سگنل دیا تھا۔ جہاز کے عملے نے بلی کو پکڑنے کی کوشش کی تو وہ کیبن میں گھس گئی۔ کافی کوششوں  کے بعد بالآخر بلی پکڑی گئی۔ مشہود تاجور کا کہنا ہے کہ،’’ ہم تحقیقات کر رہے ہیں کہ بلی جہاز میں کیسے پہنچی اور چھپ گئی۔