1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پسند کی شادی پر بیوی اور شوہر کو گولی مار دی گئی

پاکستان میں پسند کی شادی کی پاداش میں میاں بیوی کو یرغمال بنا گیا اور پھر گولیاں مار کر ہلاک کر دیا گیا۔ ہلاک ہونے والی لڑکی حاملہ تھی۔

پاکستان میں غیرت کے نام پر قتل کا یہ تازہ واقعہ ملک کے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے علاقے ٹھیکری والا میں بدھ کے روز پیش آیا۔

ایک سینیئر مقامی پولیس افسر ملک وارث نے اتوار کے روز خبر رساں ادارے اے ایف پی سے بات چیت میں بتایا کہ اس جوڑے کو ان کے رشتہ داروں نے قتل کر دیا، کیوں کہ انہوں نے ان کی پسند کی اس شادی کو قبول کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ پولیس افسر وارث کا کہنا تھا کہ قتل کرنے کے بعد ٹھیکری والا گاؤں کے قریب ایک نہر میں مقتولین کی لاشیں پھینک دی گئی تھیں۔

پولیس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ہلاک ہونے والی حاملہ لڑکی اقصیٰ بی بی کی عمر 22 جب کہ اس کے شوہر شکیل احمد کی عمر 26 برس تھی اور یہ دونوں ایک مقامی فارمیسی میں کام کرتے تھے۔ چار برس قبل انہوں نے اپنے گھر والوں کو بتائے بغیر چھپ کر شادی کر لی تھی۔ تاہم عدالت میں کیے گئے اس نکاح کی بھنک آخر کار ان کے گھر والوں کو پڑ ہی گئی، جس کا نتیجہ اس جوڑے کے قتل کی صورت میں برآمد ہوا۔ پولیس کی جانب سے یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ اقصیٰ کتنے ماہ کی حاملہ تھی۔

Pakistan Selbstmordanschlag in Jacobabad

غیرت کے نام پر قتل قریب ایک ہزار افراد کی موت کی وجہ بنتے ہیں

بتایا گیا ہے کہ اس واقعے کے ذمے داری اقصیٰ کے اہل خانہ ہیں، جو ایک قریبی گاؤں میں رہائش پزیر ہیں۔ پولیس کے مطابق اقصیٰ کا ایک بھائی محمد معاویہ جو بیرون ملک سے حال ہی میں وطن واپس لوٹا تھا، نے اپنے رشتے دارں کا ایک گروپ بنایا اور اس جوڑے کو اغوا کیا۔ بعد میں اس جوڑے کو گولیاں مار کر ہلاک کر دینے کے بعد ایک قریبی نہر میں پھینک دیا گیا۔

پولیس افسر ملک وارث نے بتایا کہ اس واقعے کا مرکزی ملزم فرار ہے اور اسے گرفتار کرنے کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

پاکستان میں عزت کے نام پر قتل کا ایک اور واقعہ ہے۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پاکستان میں ہر برس اس طرح کی قتل کی وارداتوں میں قریب ایک ہزار افراد مارے جاتے ہیں۔

گزشتہ ہفتے پسند کی شادی کرنے پر ایک لڑکے کو اس کی بیوی کے گھر والوں نے ذبح کر دیا تھا۔ اس سے ایک ہفتے قبل زینت بی بی نامی ایک 16 سالہ لڑکی کو اپنی پسند کی شادی کرنے پر اس کے گھر والوں نے قتل کر دیا تھا۔