1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پرویز مشرف کے صدارتی مستقبل سے متعلق مسلسل بحث

پاکستانی صدر اور سابق آرمی چیف پرویز مشرف پر صدارتی عہدے سے مستعفی ہونے کے لئے دباؤ مسلسل بڑھتا جا رہا ہے۔ یہ دباؤ اندرونی بھی ہے اور بیرونی بھی۔

default

ہاں ایک طرف پاکستان میں 18 فروری کے عام انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے والی اب تک کی پوزیشن میں شامل سیاسی جماعتیں صدر پر مستعفی ہونے کے لئے دباؤ ڈال رہی ہیں وہیں پر بعض بصرین کی رائے میں فوج اور حکومتی ادارے بھی اب پرویزمشرف کی حمایت سے ہاتھ کھینچنے لگے ہیں۔

دوسری جانب برطانوی اخبار سنڈے ٹیلی گراف بھی اس بات کا عندیہ دے چکا ہے کہ پاکستانی صدر کی ان کے عہدے سے رخصتی اب صرف چند دنوں کی بات ہے۔ اس کے برعکس اسلام آباد میں صدر کے ایک ترجمان نے ان رپورٹوں اور اس بارے میں جاری بحث کو غلط اور بے معنی قرار دیتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف نہ تو مستعفی ہونے کا کوئی ارادہ رکھتے ہیں اورنہ ہی وہ ایسا کریں گے۔

پرویز مشرف کے صدارتی مستقبل کے بارے میں شامل شمس نے بات چیت کی لاہور میں بزرگ صحافی اور معروف سیاسی تجزیہ نگار حسین نقی سے۔

ملتے جلتے مندرجات