1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پرتگال کا مالی بحران : برطانیہ براہ راست مدد نہیں کرے گا

پرتگال کی مدد کے لیے یورپی یونین اورآئی ایم ایف کے ماہرین نے لزبن حکومت کو بیل آؤٹ پیکج کے طور پر 80 بلین یورو مہیا کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ لیکن برطانیہ نے پرتگال کی براہ راست امداد سے انکار کر دیا ہے۔

default

برطانوی وزیر خزانہ جارج اوسبورن

برطانوی وزیر خزانہ جارج اوسبورن نے کہا ہے کہ پرتگال حکومت نے یورپی یونین سے ہنگامی مالی امداد کی اپیل کی جس پر لزبن کو تقریبا اسی بلین یورو یا ایک سو پندرہ بلین امریکی ڈالر کی ہنگامی امداد مہیا کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

تاہم انہوں نے کہا کہ لندن حکومت کی طرف سے لزبن کو دو طرفہ بنیادوں پر قرضہ نہیں دیا جائے گا۔ ہنگری کے دارالحکومت بوداپیسٹ میں یورپی یونین کے وزراء خزانہ کے ایک اجلاس کے بعد برطانوی وزیر مالیات نے کہا ،’’لندن حکومت نے یورپی ملکوں پر واضح کر دیا ہے کہ آئرلینڈ کا معاملہ مختلف تھا تاہم برطانیہ پرتگال کو دو طرفہ بنیادوں پر کوئی ہنگامی قرضہ نہیں دے گا برطانوی ٹیکس دہندگان کی ادا کردہ رقوم پرتگال کو براہ راست قرضوں کے طور پر مہیا نہیں کی جائیں گی۔‘‘

Portugal Europas Finanzminister erarbeiten Rettungsplan Portugals Finanzminister Fernando Teixeira dos Santos NO FLASH

پرتگال کی نگران حکومت کے وزیر خزانہ Fernando Teixeira dos Santos

اس موقع پر برطانوی وزیر خزانہ نے یہ بات بھی زور دے کر کہی کہ لندن حکومت کو ملک کے سالانہ بجٹ میں بے تحاشا خسارے پر قابو پانے کے لیے فوری اقدامات کی ضرورت ہے۔

جارج اوسبورن یہ وضاحت کرنے پر اس لیے مجبور ہو گئے ہیں کہ برطانیہ کے بجٹ میں بےتحاشا خسارہ وہاں قدامت پرستوں اور لبرل ڈیموکریٹس کی مخلوط حکومت اور اپوزیشن کی لیبر پارٹی کے درمیان شدید تنازعے کی وجہ بھی بنا ہوا ہے۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: شادی خان سیف

DW.COM

ویب لنکس