1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

پاک بھارت وزرائے خارجہ کی ملاقات

پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور بھارتی وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا کے درمیان اٹلی کے شہر ٹری ایسٹے میں ہونے والی اس ملاقات کو شاہ محمود قریشی نے دوستانہ اور تعمیری قرار دیا ہے۔

default

پاکستانی وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی

ملاقات کے بعد پاکستانی وزیر خارجہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئےکہا کہ باہمی گفتگو میں جو موضوعات زیر بحث آئے ان میں دہشت گردی کے خلاف جنگ بھی شامل ہے۔

شاہ محمود قریشی نے اس موقع پر کہا کہ ان کے خیال میں دونوں ممالک کو اب اس بات کا ادراک ہوگیا ہے کہ ان کے مفادات مشترک ہیں، ان کا دشمن مشترک ہے اور دونوں کو باہمی تعاون کی فضا میں آگے بڑھنا ہوگا۔

SOC Gipfel in Russland Zardari und Manmohan Singh

سولہ جون کو پاکستانی صدر آصف علی زرداری اور بھارتی وزیراعظم روسی شہر ایکترن برگ میں ملاقات کرچکے ہیں

تاہم بھارتی وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا نے تسلیم کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات ابھی تک کافی دباؤ کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی اور بھارتی خارجہ سیکرٹریوں کے درمیان جلد ہونے والی ملاقات میں دہشت گردی کے خلاف تعاون کے معاملے پر غور کیا جائے گا۔

دونوں ایٹمی طاقتوں کے وزراء خارجہ کے درمیان یہ ملاقات اٹلی کے شہر ٹری ایسٹے میں جاری جی ایٹ وزراء خارجہ کے اجلاس کے موقع پر ہوئی۔ دس دنوں کے دوران دونوں ممالک کے درمیان یہ دوسرا اعلیٰ سطحی رابطہ ہے۔ اس سے قبل 16 جون کو پاکستانی صدر آصف علی زرداری اور بھارتی وزیراعظم روسی شہر ایکترن برگ میں ملاقات کرچکے ہیں۔

گزشتہ برس ممبئی میں ہونے والے دہشت گردانہ حملوں کے بعد پاکستان اور بھارت کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان پانچ سال سے جاری مذاکرات تعطل کا شکار ہوگئے تھے۔ امریکہ دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان مذاکرات کی بحالی کی کوشش کررہا ہے تاکہ دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی میں کمی ہو، اور پاکستان مشرقی سرحدوں سے اپنی توجہ کم کرکے افغانستان سے ملحقہ اپنی مغربی سرحدوں کے قریب موجود طالبان عسکریت پسندوں کے خلاف پوری قوت سے کارروائی کرسکے۔

DW.COM