1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان نے ایک مرتبہ پھر امریکا کا احترام کرنا شروع کر دیا ہے، ٹرمپ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکی اور کینیڈین شہریوں کی رہائی کی پاکستانی کوششوں سے لگتا ہے کہ اسلام آباد حکومت امریکا کا احترام کرتی ہے۔ دوسری جانب کینیڈا حکومت نے اس پیش رفت پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔

پاکستان میں طالبان کی قید سے کینیڈین اور امریکی شہریوں کی بازیابی پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پیش رفت پاکستان اور امریکی تعلقات میں ایک خوشی کا لمحہ ہے۔ پاکستانی فوج کے مطابق ایک عسکری کارروائی کے دوران چار کینیڈین اور ایک امریکی شہری کو آزاد کروا لیا گیا ہے۔ ان پانچ افراد کو سن دو ہزار بارہ میں افغانستان میں اغوا کیا گیا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ انہیں پاکستان منتقل کرنے کی اطلاع پر فوجی کارروائی کی گئی تھی۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مزید کہا  ہے کہ ان غیر ملکیوں کی بازیابی کے لیے پاکستانی تعاون اشارہ دیتا ہے کہ پاکستان اس امریکی مطالبے کی قدر کرتا ہے کہ علاقائی سکیورٹی کو بہتر بنانے کی خاطر پاکستان کو مزید کوششیں کرنا چاہیئں۔ وائٹ ہاؤس میں ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ پاکستان نے ایک مرتبہ پھر امریکا کا احترام کرنا شروع کر دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا یہ کہ مغوی حقانی نیٹ ورک کی تحویل میں تھے۔

پاکستانی فوج کی کارروائی، غیر ملکی مغوی بازیاب

دوسری جانب کینیڈا کی وزارت خارجہ نے اس پیش رفت پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ خاتون وزیر خارجہ کرسٹیا فری لینڈ کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے ان کا ملک امریکا، افغانستان اور پاکستان کے ساتھ رابطے میں تھا۔ انہوں نے ان تمام ممالک کا شکریہ ادا کیا ، جن کی مدد سے یہ پیش رفت ممکن ہوئی ہے۔ پاکستان میں جس وقت بازیابی کا یہ آپریشن جاری تھا، اس وقت کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹرُوڈو واشنگٹن میں امریکی صدر سے ملاقات کر رہے تھے اور دنوں رہنماؤں نے اس حوالے سے بھی گفتگو کی ہے۔

قبل ازیں پاکستانی فوج کے شعبہء تعلقات عامہ کا کہنا تھا کہ آرمی اور خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کی مشترکہ کارروائی میں ان پانچ غیر ملکی مغویوں کو بازیاب کرا لیا گیا ہے، جنہیں 2012ء میں افغانستان میں اغوا کیا گیا تھا۔

بازیاب ہونے والی کیتلان کولمن جن کا تعلق امریکی ریاست پینسلوینیا سے ہے اپنے کینیڈین شوہر جوشوا بوئل کے ساتھ پانچ برس قبل افغانستان میں تھیں جب انہیں اغوا کر لیا گیا۔ کولمن اس وقت حاملہ تھیں۔  نیوز ایجنسی اے پی کے مطابق اغوا ہونے کے بعد طالبان کی قید کے دوران اس جوڑے کے تین بچے ہوئے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مزید کہا کہ امریکی حکومت نے پاکستانی حکومت  کے ساتھ مل کر بوئل کولمن کو پاکستان سے بازیاب کرا لیا ہے۔ امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن کی جانب سے بھی ایک بیان جاری کیا گیا ہے، جس میں امریکا کی جانب سے اس کامیاب آپریشن پر پاکستان کی حکومت اور فوج کا شکریہ ادا کیا گیا ہے۔

DW.COM