1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان نے افغان سرحد سے فوجی یونٹ بھارتی سرحد پر منتقل کئے: امریکہ

امریکی محکمہء دفاع کے مطابق شمال مغربی پاکستان میں اسلامی انتہا پسندوں کے خلاف اسلام آباد حکومت کی جدوجہد کے نتائج اِس لئے ملے جلے رہے کیونکہ کچھ فوجی یونٹوں کو بھارت کے ساتھ ملنے والی مشرقی سرحد پر منتقل کر دیا گیا تھا۔

default

پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق کیانی، جن کی سربراہی میں اعلیٰ سطحی وفد نے واشنگٹن کا دورہ کیا ہے

صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے پینٹاگان کے پریس سیکریٹری جیف موریل نے جمعرات کو کہا کہ پاکستان کے اس خطے میں جاری آپریشنز کے مؤثر ہونے کے حوالے سے دیکھا جائے تو کچھ شعبوں میں پیشرفت ہوئی ہے جبکہ دیگر میں صورتحال اور زیادہ خراب ہو گئی ہے۔

امریکہ کے خیال میں دہشت گرد تنظیم القاعدہ اپنی کھوئی ہوئی طاقت کو پاک افغان سرحدی علاقے میں پھر سے مجتمع کر رہی ہے۔ موریل نے کہا کہ امریکہ پاکستان کو عسکریت پسندوں کے خلاف مقابلے کے لئے امداد فراہم کرنے کو تیار ہے لیکن محض ایک ایسے انداز میں، جو اسلام آباد حکومت کے لئے قابل قبول ہو۔

واشنگٹن میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے موریل نے ان خیالات کا اظہار پاکستان سے گئے ہوئے اُس اعلیٰ سطحی وفد کے دَورہء واشنگٹن کے بعد کیا، جس میں پاکستانی فوج کے سریراہ جنرل اشفاق کیانی بھی شامل تھے۔

موریل کے مطابق جنرل اشفاق کیانی کے اِن خیالات پر امریکی نمائندوں بالخصوص امریکی وزیر دفاع نے اطمینان کا اظہار کیا کہ اُن کے علاقے میں موجود عسکریت پسند جتنا زیادہ پاکستان کے لئے خطرہ ہیں، اتنا ہی امریکہ کے لئے بھی ہیں۔

پاکستان امریکہ کی جانب سے بغیر پائلٹ کے جہازوں سے اپنی سرزمین پر کئے جانے والے حملوں پر سخت ناراض ہے تاہم وہ نہ صرف اِن حملوں کو رُکوانے میں کامیاب نہیں ہو سکا بلکہ اُس کی یہ کوششیں بھی بارآور ثابت نہیں ہوئیں کہ امریکہ ڈرونز کا نظام پاکستانی حکام کی نگرانی میں دے دے۔