1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان میں گرفتار پانچ امریکی: ریمانڈ میں توسیع

پاکستان کے شمال مشرقی شہر سرگودھا سے دسمبر کے اوائل میں جن پانچ امریکی شہریوں کو دہشت گردی کے شبے میں گرفتار کیا گیا تھا، ان پر ابھی تک کوئی باقاعدہ عدالتی الزامات عائد نہیں کئے جا سکے۔

default

عدالت کے نواح میں ڈیوٹی پر موجود ایک پولیس اہلکار

سرگودھا کی ایک عدالت نےجمعہ کے روز ان ملزمان کو مزید دس روز کے لئے پولیس کے تحویل میں دے دیا تاکہ بنیادی چھان بین مکمل کی جا سکے۔ دسمبر کے شروع میں ایک چھاپے کے دوران گرفتار کئے گئے ان پانچ امریکی باشندوں میں سے دو اپنی دوہری شہریت کی وجہ سے پاکستانی شہری بھی ہیں۔

جمعہ کے روز ان ملزمان کو جب عدالت میں پیش کیا گیا تو استغاثہ کی طرف سے یہ موقف اختیار کیا گیا کہ ابھی تک پولیس ان مشتبہ دہشت گردوں سے بنیادی پوچھ گچھ مکمل نہیں کر سکی۔ لہٰذا مزید تفتیش کے لئے انہیں اگلے دس روز کے لئے دوبارہ پولیس کی تحویل میں دے دیا جائے۔ اس پر عدالت نے تفتیش کاروں کو مزید وقت دیتے ہوئے ان پانچوں امریکیوں کو اگلے دس دنوں کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا۔

پاکستانی حکام کے بقول صوبہ پنجاب کے شہر سرگودھا میں قیام کے دوران یہ غیر ملکی دہشت گرد نیٹ ورک القاعدہ سے قربت رکھنے والی تنظیموں اور عسکریت پسند گروپوں کے ساتھ رابطوں کی کوششوں میں تھے۔ ’’وہ غالبا شمال مغربی پاکستان میں طالبان کی پہلے سے جاری مسلح کارروائیوں میں شریک ہونا چاہتے تھے۔‘‘

Symbolgrafik: FBI und Kapitol

سرگودھا میں امریکی شہریوں سے FBI کے اہلکاروں نے بھی پوچھ گچھ کی

عدالت کے جج محمد اسلم نے ملزمان کو ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرتے ہوئے حکم دیا کہ ان امریکیوں کو دوبارہ چار جنوری کو عدالت میں پیش کیا جائے۔ ان ملزمان سے اب تک پاکستان ہی میں امریکی تحقیقاتی ادارے FBI کے اہلکار بھی پوچھ گچھ کر چکے ہیں۔ امریکی محکمہ انصاف اس امر کا سنجیدگی سے جائزہ لے رہا ہے کہ امریکی شہری ہونے کی وجہ سے ان افراد کے خلاف کسی امریکی عدالت میں دہشت گردی سے متعلق کس طرح کے ٹھوس الزامات عائد کئے جا سکتے ہیں۔

پولیس کے ایک اعلیٰ اہلکار حسیب شاہ نے صحافیوں کو بتایا کہ ان ملزمان سے تفتیش بہت پیچیدہ عمل ہے جو ریمانڈ سے متعلق جمعہ کے عدالتی فیصلے سے قبل محض دس روز میں مکمل نہیں کیا جا سکتا تھا۔ حسیب شاہ کے بقول پولیس اس شخص کا پتہ چلانے کی کوششوں میں ہے جس سے ملزمان نے رابطہ کیا تھا اور جس کے القاعدہ سے بھی قریبی تعلقات ہیں۔

پاکستان میں گرفتار کئے گئے ان پانچوں امریکی شہریوں کا تعلق امریکی دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی اور اس کے قریبی علاقے سے ہے۔ ان مشتبہ دہشت گردوں سے متعلق17 دسمبر کو ایک مقامی عدالت نے یہ حکم بھی دیا تھاکہ پاکستانی حکام اس عدالت کی اجازت کے بغیر ان امریکیوں کو ملک بدر کر کے واشنگٹن کے حوالے نہ کریں۔

رپورٹ: مقبول ملک

ادارت: عدنان اسحاق

DW.COM