1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

پاکستان میں مذہبی حقوق کا تحفظ: پاپائے روم کی توقعات

پوپ بینیڈکٹ شانزدہم کے مطابق وہ دعا کرتے ہیں کہ پاکستان میں مسیحی برادری سے تعلق رکھنے والے اقلیتوں کے وفاقی وزیر شہباز بھٹی کے قتل کے بعد حکومت تمام سماجی گروپوں کے مذہبی حقوق کے تحفظ کے لیے ٹھوس اقدامات کرے گی۔

default

ویٹیکن سے ملنے والی رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ پاپائے روم گزشتہ برس پاکستان کے اقلیتی امورکے وفاقی وزیر شہباز بھٹی سے ملے تھے، جو عقیدے کے اعتبار سے خود بھی ایک کیتھولک مسیحی شہری تھے۔

Pakistan Minister für Minderheiten Shahbaz Bhatti

پاکستانی وزیر شہباز بھٹی گزشتہ برس پاپائے روم سے ملے تھے

اس ملاقات کے حوالے سے ویٹیکن سے موصولہ رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ شہباز بھٹی پاکستان میں توہین رسالت سے متعلق قانون کے غلط استعمال کو رکوانے کی جنگ لڑ رہے تھے اور بھٹی کے ساتھ ملاقات میں پاپائے روم نے پاکستان میں اس مسیحی خاتون کی رہائی کی اپیل بھی کی تھی، جسے توہین رسالت کے جرم میں سزائے موت سنائی گئی تھی اور جو ابھی تک جیل میں ہے۔

پاکستان میں اقلیتی امور کے وفاقی وزیر شباز بھٹی کو اسلام آباد میں بدھ کے روز گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ اس بارے میں کلیسائے روم کے سربراہ نے آج اتور کو ویٹیکن میں سینٹ پیٹرز اسکوائر پر جمع مسیحی زائرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شہباز بھٹی کی موت ’ہلا کر رکھ دینے والی قربانی‘ ہے۔

پوپ بینیڈکٹ شانزدہم نے کہا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ شہباز بھٹی کی موت سے ضمیر جاگیں گے، ہمت کا مظاہرہ کیا جائے گا اور پاکستان میں ہر کسی کے لیے برابری، احترام اور مذہبی آزادی کے لیے کوششیں کی جائیں گی۔

رپورٹ: عصمت جبیں

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس