1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان میں مختلف دھماکوں میں 13 افراد ہلاک

پاکستان کے قبائلی علاقے کرم ایجنسی میں سڑک کے کنارے نصب بم کے دھماکے میں دس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ کوئٹہ میں بھی ایک حکومتی وزیر کے گھر پر دھماکے میں کم از کم تین افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

default

خبر رساں ادارے روئٹرز نے حکومتی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ افغانستان سے ملحقہ پاکستان کے اس قبائلی علاقے میں دھماکہ کرم کے مرکزی علاقے پارہ چنار سے 65 کلومیٹر دُور پالاسین گاؤں میں ہوا۔ اسے القاعدہ سے منسلک شدت پسندوں کی دہشت گردانہ کارروائیوں کے نئے سلسلے کی ایک کڑی قرار دیا جا رہا ہے۔

اس علاقے میں مقامی انتظامیہ کے نائب سربراہ حامد خان کا کہنا ہے، ’یہ دھماکہ ریموٹ کنٹرول سے اس وقت کیا گیا، جب ایک مسافر وین وہاں پہنچی۔‘ انہوں نے بتایا کہ ہلاک ہونے والے تمام افراد عام شہری تھے۔

پاکستانی طالبان نے قبائلی علاقوں میں امریکی ڈرون حملوں کے تناظر میں حکومتی اہداف پر مزید حملوں کی دھمکی بھی دی ہے۔ گزشتہ روز سے ان علاقوں میں چار ڈرون حملے ہوئے، جن میں 19 شدت پسند ہلاک ہوئے۔ تاہم ان ہلاکتوں کی آزاد ذرائع سے تصدیق ممکن نہیں جبکہ شدت پسند حکومتی اعداد و شمار کو ہمیشہ ہی غلط قرار دیتے ہیں۔

دوسری جانب پاکستان کے جنوب مغربی شہر کوئٹہ میں بھی ایک دھماکہ ہوا ہے، جس میں تین افراد ہلاک ہوئے۔ یہ دھماکہ بلوچستان کے وزیر خزانہ عاصم کرد کے گھر میں ہوا۔ کوئٹہ میں سٹی پولیس کے سربراہ عابد نوتکانی کا کہنا ہے، ’بم مہمانوں کے کمرے میں رکھا گیاتھا، خدا کا شکر ہے کہ اس وقت تک زیادہ تر مہمان وہاں سے نکل چکے تھے۔‘

نوتکانی نے بتایا کہ صوبائی وزیر عاصم کرد محفوظ رہے۔ بلوچستان رقبے کے اعتبار سے پاکستان کا سب سے بڑا جبکہ آبادی کے لحاظ سے سب سے چھوٹا صوبہ ہے، جسے ایک عرصے سے بلوچ قوم پرستوں کی جانب سے کم تر سطح کی شدت پسندی کا سامنا ہے۔ یہ قوم پرست خودمختاری اور صوبے کے قدرتی وسائل میں زیادہ حصے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

Pakistan Anschlag auf Schiiten in Quetta Flash-Galerie

کوئتہ میں شیعہ مسلمانوں کی ریلی پر ہونے والے حملے میں درجنوں افراد ہلاک ہوئے

پاکستان کو تاریخ کے بدترین سیلاب کا سامنا ہے اور اِن حالات میں بھی ملک کے مختلف علاقوں میں دہشت گردانہ کارروائیوں کے دوران تقریباﹰ ڈیڑھ سو افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں بدترین دھماکے گزشتہ ہفتے پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور اور بلوچستان کے صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں ہوئے۔ اِن دونوں شہروں میں خودکش بمباروں نے شیعہ مسلمانوں کے جلوسوں کو نشانہ بنایا تھا۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس