1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان میں جمہوری حکومت کا ایک سال، ’راوی چین ہی چین لکھتا ہے‘

پاکستان میں پیپلز پارٹی کی حکومت کا ایک سال مکمل ہونے پر حکمران جماعت نے صدر آصف زرداری، وزیراعظم یوسف گیلانی، قائدین ، کارکنوں اور ملک بھر کی سیاسی قیادت کو مبارکباد پیش کی ہے۔

default

گزشتہ برس فروری میں ہونے والے انتخابات میں پیپلز پارٹی کو اکثریت حاصل ہوئی تھی

پیپلز پارٹی کی حکومت کی ایک برس کی کارکردگی پر حقائق نامہ جاری کیا گیا ہے۔ اس حقائق نامے میں حکومت کے ایک سال کو پارلیمان کی بالادستی، جمہوری اداروں کی مضبوطی اور بینظیر بھٹو کے عہد کی پاسداری کا سال قرار دیا ہے۔

Pervez Musharraf

سابق صدر پرویز مشرف گزشتہ برس اگست میں اپنے عہدے سے مستعفی ہوئے تھے

حقائق نامے میں بتایا گیاہے کہ حکومت نے ایک برس میں ملک کو مفاہمت اور رواداری کی راہ پر گامزن کیا اور مرکز اور چاروں صوبوں میں قومی مفاہمت کے تحت حکومتیں قائم کی گئیں۔ پیپلز پارٹی کے بقول اس سال جمہوری طاقتوں سے مل کر آمریت کا خاتمہ کیا گیا، ہر اہم مسئلے کو پارلیمینٹ میں پیش کیاگیا اور اہم قومی امور پر پہلی مرتبہ ملک بھر کی سیاسی قیادت کو پارلیمان کے ذریعے اعتماد میں لیا گیا۔

پیپلز پارٹی کا یہ بھی دعویٰ ہے کے گزرنے والے سال میں سینیٹ کے انتخاب میں مفاہمت کی ایک نئی جہت سامنے آئی اور عدلیہ کو مکمل طور پر بحال کر کے عوامی امنگوں کی ترجمانی کی گئی۔

Pakistan Präsident Pervez Musharraf und Premierminister Yousaf Raza Gilani

انتخابات میں پرویز مشرف مخالف جماعتوں کو اکثریت حاصل ہوئی تھی

پیپلز پارٹی کا موقف ہے کہ حکومت نے سابق ادوار میں ملازمتوں سے نکالے ہوئے 7700 ملازمین کو بحال کیا، یونین سازی کا حق بحال کیا گیا، بے روزگاری کے خاتمے کیلئے سرکاری نوکریوں پر سے پابندی اٹھائی گئی اور یوتھ پالیسی تیار کی گئی جس کے ذریعے 4 کروڑ نوجوانوں کو فنی تربیت اور ملازمتیں فراہم کی جائیں گی۔

پاکستانی صدر آصف علی زرداری نے بھی جمہوری حکومت کا پہلا سال مکمل ہونے پر حکومت، پارلیمنٹ، تمام سیاسی جماعتوں اور عوام کو مبارکباد پیش کی ہے۔ اپنے ایک پیغام میں زرداری کا نےکہا ہے کہ قومی مصالحت، اقتصادی استحکام، دہشت گردی کے خلاف جنگ اور خطہ میں امن و استحکام کے لئے حکومتی اقدامات کے ثمرات حاصل ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

Pakistan Asif Ali Zardari neuer Präsident

ابتداء میں مسلم لیگ نواز حکمران اتحاد کا حصہ تھی جو بعد میں الگ ہو گئی

دوسری جانب سیاسی مبصرین پاکستان میں سیاسی حکومت کے پہلے سال کی کارکردگی کو متاثر کن قرار نہیں دے رہے۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ جمہوری حکومت کے پہلے برس پاکستان بدستور دہشت گردی کی زد میں رہا اور عسکریت پسندوں کی کارروائیوں میں نمایاں اضافہ دیکھا گیا۔ اس کے علاوہ جمہوری حکومت کے اس پہلے سال میں ملکی اقتصادی صورت حال مزید خراب ہوئی اور آئی ایم ایف سے قرض لے کر اسے عارضی طور پر سہارا دیا گیا۔

عوامی حلقوں میں بھی اس حوالے سے حکومت پر تنقید کرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اور عوامی توقعات کے برعکس مہنگائی میں مسلسل اضافے اور لوڈشیڈنگ کے مسائل میں شدت کے علاوہ کارخانوں کی بندش اور دیگر سنگین مسائل کی وجہ سے سیاسی حکومت کی حمایت میں نمایاں کمی دیکھی گئی ہے۔

Audios and videos on the topic