1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان میں بجلی کا بحران ، اس پر قیمتوں میں اضافہ

لوڈ شیڈنگ پر قابو پانے کے دعووں کے باوجود اہم شہروں سمیت تجارتی مرکز کراچی میں بجلی کا بحران شدید ہو گیا ہے۔ واپڈا اور کراچی کو بجلی فراہم کرنے والا ادارہ کے ایس سی اس بحران کی زمہ داری ایک دوسرے پر تھوپ رہے ہیں۔

default

کراچی میں بجلی کی بندش سے شدید اقتصادی نقصان ہو رہا ہے

پاکستان میں بجلی کی کھپت بائیس سو میگا واٹ بتائی جاتی ہے لیکن اس وقت صرف چودہ سو میگا واٹ بجلی فراہم کی جا رہی ہے۔ تجارتی مرکز کراچی میں بجلی کے بحران کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ یہاں غیراعلانیہ طور پر نو سے دس گھنٹوں تک لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔

شہر کو بجلی فراہم کرنے والے کئی پاور پلانٹ بند ہیں جبکہ انتظامیہ اس بندش کی وجہ کو کبھی مرمت اور کبھی بریک ڈاون قرار دیتی ہےجبکہ کراچی میں موجود ہمارے نمائندے نے بتایا ہے کہ حقیقت یہ ہے کہ بجلی فراہم کرنے والے ادارے کے پاس فرنس آئل خریدنے کے پیسے ہی نہیں ہیں۔

کراچی کے شہریوں نے لوڈ شیڈنگ کے ساتھ ساتھ بجلی کے نرخوں میں اضافے کو ظلم قرار دیا ہے۔ دوسری طرف ماہرین کا کہنا ہے کہ موجودہ حکومت نے بجلی کے نرخوں میں اضافے کو روکنے اور ملک میں بجلی کی کمی کو پورا کرنے کے لئے ضلع تھرپارکر میں موجود کوئلے کو توانائی کے منصوبے میں استعمال کرنے کی منصوبہ بندی کی ہے۔ اس حوالے سے تھرکول پاور بورڈ تشکیل دے دیا گیا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ تھرپارکر کے کوئلے سے ایک لاکھ میگا واٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے جو ملک کی ضروریات سے اسی فیصد زیادہ ہے۔

Audios and videos on the topic