1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان: تاریخ کا سب سے بڑا سیلاب

پاکستان کو آج کل اس کی ریاستی تاریخ کے سب سے بڑے سیلاب اور اس وجہ سے شدید تباہ کاریوں کا سامنا ہے۔ پنجاب کے ریلیف کمشنر اخلاق احمد تارڑ کے بقول دریائے سندھ سے اس وقت گزشتہ ایک صدی کا سب سے بڑا سیلابی ریلا گذر رہا ہے۔

default

دریائے سندھ میں چشمہ کےمقام پر 1901 میں نو لاکھ کیوسک پانی دیکھنے میں آیا تھا مگر اس سال یہاں سے گذرنے والے دس لاکھ کیوسک پانی نے اس مقام پر پانی کی سطح کا ایک سو دس سالہ ریکارڈ توڑ دیا ہے۔

پاکستان میں ماضی میں 1956، 1976، 1986 اور 1992 میں بڑے سیلاب آئے تھے۔ ان سیلابوں کے دوران بھی دریائے سندھ میں پانی کی زیادہ سے زیادہ سطح کالا باغ کے مقام پر آٹھ لاکھ 62 ہزار اور چشمہ کےمقام پر سات لاکھ 86,600 کیوسک سے نہیں بڑھ پائی تھی۔ اس سال کالا باغ کے مقام پر پانی کا بہاؤ نولاکھ کیوسک اور چشمہ پر دس لاکھ کیوسک سے تجاوز کرگیا۔

Pakistan Flut Katastrophe 2010 Flash-Galerie

پاکستان کی تاریخ میں یہ انتہائی غیر معمولی سیلاب قرار دیا جا رہا ہے

پاکستان میں ریاستی تاریخ کے ان انتہائی غیر معمولی سیلابوں کے نتیجے میں غیر معمولی تباہ کاریاں دیکھنے میں آ رہی ہیں۔ بعض اطلاعات کے مطابق حالیہ سیلابوں کے نتیجے میں ہونے والے مادی نقصانات کا ابتدائی تخمینہ 150 ارب روپے بنتا ہے۔

محکمہء موسمیات کے ڈائریکٹر جنرل اجمل شاد کے مطابق اگست کے مہینے میں ملک کے بعض علاقوں میں غیر متوقع طورپر ایسی بھاری بارشیں دوبارہ بھی ہو سکتی ہیں۔ان کےمطابق پنجاب سندھ اور کشمیر سمیت ملک کے بیشتر مشرقی علاقوں میں منگل کی رات سے بارشوں کا ایک نیا سلسلہ شروع ہوگا، جو پانچ اگست تک جاری رہے گا۔

Pakistan Flut Katastrophe 2010 Flash-Galerie

ایک ہیلی کاپٹر امدادی کاروائیوں میں مصروف

محمکہء موسمیات پاکستان پہلے ہی یہ پیشین گوئی کر چکا ہے کہ اس سال مون سون کے دوران ملک میں معمول سے پندرہ سے بیس فیصد تک زیادہ بارشیں ہوں گی۔

رپورٹ: تنویر شہزاد، لاہور

ادارت: عصمت جبیں

DW.COM