1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

پاکستان اور بھارت جنگ سے اجتناب کریں: پاکستان کی انسانی حقوق کی تنظیموں کا مطالبہ

پاکستان کمشن برائے انسانی حقوق کی چیئرپرسن عاصمہ جہانگیر نے لاہور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان اور بھارت کی حکومتوں کو جنگ سے باز رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

default

ممبئی دہشت گرد حملوں کا ملزم اجمل قصّاب بھارتی اور پاکستانی میڈیا کا پسندیدہ ترین موضوع بن کر ابھرا ہے

ہفتے کے روز سول سوسائٹی کی ایک درجن کے قریب تنظیموں کے عہدیداروں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےعاصمہ جہانگیر نے دونوں ممالک پر زور دیا کہ وہ جنگ کے بجائے سفارت کاری کا راستہ اختیار کریں۔

indische Grenzsoldaten

پاکستان کی سول سوسائٹی کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ پاکستان اور بھارت جنگی جنون پیدا نہ کریں اور پاکستان ’سیلف ڈینائل‘ یا خود نفی کی پالیسی ترک کرے


عاصمہ جہانگیر نے ممبئی حملوں کے بعد بھارتی اور پاکستانی میڈیا کے کردار پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ زرائع ابلاغ غیر جانب داری کے ساتھ صورتِ حال پیش کریں اور جنگی جنون یا ’وار ہسٹیریا‘ پیدا کرنے سے اجتناب کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت اور پاکستان کی حکومتیں جامع مذاکرات کی طرف واپس آئیں کیوں کہ جنگیں مسائل کا حل نہیں ہیں۔ ان کے مطابق جنگ کی صورت میں دہشت گرد اپنے مقاصد پورے کرلیں گے۔

Manmohan Singh

بھارتی وزیرِ اعظم من موہن سنگھ نے پاکستان سے ایک بار پھر مطالبہ کیا ہے کہ وہ ممبئی حملوں میں ملوّث افراد کو پاکستان کے حوالے کرے


عاصمہ جہانگیر نے پاکستانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ماضی کی پالیسیوں کو فوری طور پر ترک کریں اور دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے ایک نیا لائحہ عمل طے کریں۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کی چیئر پرسن عاصمہ جہانگیر نے پاکستان اور بھارت کے عوام سے اپیل کی کہ وہ خاموش تماشائی بنے رہنے کے بجائے جنگ کے خلاف آواز بلند کریں۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی سول سوسائٹی کی تنظیمیں صرف اس پریس کانفرنس پر اکتفا نہیں کریں گی بلکہ پورے ملک میں عوام کو متحرک کرنے کے لیے کارنر میٹنگز اور ریلیاں منعقد کریں گی۔

پریس کانفرنس کے شرکاء نے ممبئی حملوں میں جاں بہ حق ہونے والوں کے لیے دعا بھی کی اور ان کے لواحقین کے ساتھ اظہار ہمدردی کیا۔

دریں اثناء بھارتی وزیرِ اعظم من موہن سنگھ نے پاکستان سے ایک بار پھر مطالبہ کیا ہے کہ وہ ممبئی حملوں میں ملوّث افراد کو پاکستان کے حوالے کرے تاکہ بھارت میں ان پر مقدمہ چلایا جا سکے۔