1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

پاکستان اور بنگلہ دیش کے درمیان وَن ڈے سیریز کا آغاز

پاکستان کی کرکٹ ٹیم بنگلہ دیش کے دورے کا آغاز کر چکی ہے۔ دورے کا ابتدائی ٹی ٹوئنٹی میچ تھا، اس میں پاکستانی ٹیم نے میزبان ٹیم کو بھاری شکست سے دوچار کیا تھا۔ تین ایک روزہ میچوں کی سریز آج سے شروع ہو رہی ہے۔

default

سعید اجمل: پاکستانی اسپنر

پاکستان کی کرکٹ ٹیم نے بنگلہ دیش کی ٹیم کے خلاف موجودہ سیریز کے دوران دو ٹیسٹ میچ اور تین ایک روزہ میچ کھیلنے ہیں۔ تین ایک روزہ میچ یکم، تین اور چھ دسمبر کو کھیلے جائیں گے۔ ان میچوں کے میزبان مقام ڈھاکہ اور چٹا گانگ ہیں۔ پہلے دو ایک روزہ میچ ڈھاکہ میں کھیلے جائیں گے۔ ایک روزہ میچوں کے بعد دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کھیلی جائے گی۔ پہلا ٹیسٹ میچ نو دسمبر سے ظہور احمد چوہدری اسٹیڈیم چٹاگانگ میں کھیلا جائے گا اور دوسرے ٹیسٹ کی شروعات سترہ دسمبر سے ہو گی اور اس کا میزبان شہر بنگلہ دیش کا دارالحکومت ڈھاکہ ہے۔

Pakistan,, pakistan cricket team, Misbah ul haq,pakistan cricket team captain. cxaptain misbah. Misbah ul haq, Foto DW/Tariq Saeed 14-10-2011

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق

بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم نے گزشتہ مہینوں کے دوران اپنی ہوم سیریز میں نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کی ٹیموں کو خاصا پریشان کیا تھا۔ بنگلہ دیش کے اسپنرز ان ٹیموں کے خلاف انتہائی مؤثر ثابت ہوئےتھے۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم کو تو تمام چار ایک روزہ میچوں میں شکست کا سامنا رہا تھا۔ انگلینڈ کی ٹیم کو ورلڈ کپ کے میچ میں ہوم ٹیم کے خلاف ہارنا پڑا تھا۔ بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم نے گزشتہ پانچ ایک روزہ میچوں میں سے تین میں کامیابی حاصل کی اور دو وہ ہاری تھی۔

مبصرین کا خیال ہے کہ جن میچوں میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم فاتح رہی تھی ان میں اس کے اسپنرز نے اہم کردار ادا کیا تھا لیکن ایسا پاکستان کے خلاف شاید ممکن نہ ہو سکے کیونکہ پاکستانی اسپنرز ان دنوں بھرپور فارم میں ہیں۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم نے گزشتہ پانچ ایک روزہ میچوں میں چار جیتے اور ایک ہارا ہے۔ ان سب میں پاکستانی بولروں کی پرفارمنس انتہائی عمدہ تھی، بلکہ کچھ میچ تو یقینی طور پر پاکستانی بولروں نے جیتے تھے۔ ان میں ایک میچ میں شاہد آفریدی نے پانچ وکٹیں حاصل کرنے کے علاوہ بیٹنگ کرتے ہوئے ستّر سے زائد رنز بنائے تھے۔

Cricket, Bangladesh, Zimbabwe

بنگلہ دیش کی ٹیم ایک سخت حریف ثابت ہو سکتی ہے

موجودہ دورے کے واحد ٹوئنٹی ٹوئنٹی میچ کا نتیجہ سامنے آنے کے بعد اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم کسی طور پاکستان کے لیے اسپنرز ٹریک بنانے کے لیے تیار نہیں ہو گی اور اسی طرح فاسٹ پچ بھی پاکستانی بولروں کے لیے زیادہ سازگار ہو سکتی ہے۔ عمر گل، اعزاز چیمہ اور نئے فاسٹ بولر صدف حسین بہتر گیند بازی کا مظاہرہ کر سکتے ہیں۔

بنگلہ دیش کی ٹیم کے اہم بیٹسمین تمیم اقبال کی مکمل فٹنس کا ان کی ٹیم انتظار کر رہی ہے۔ شکیب الحسن اور محمود اللہ یقنی طور پر میزبان ٹیم کے مرکزی کھلاڑی ہوں گے۔ دوسری جانب شعیب ملک یقینی طور پر انڈر پریشر ہو سکتے ہیں کیونکہ وہ ابھی تک بہتر پرفارمنس کا مظاہرہ نہیں کر سکے ہیں۔ پاکستان کے بیشتر سینئر کھلاڑی ان فارم ہیں۔

رپورٹ: عابد حسین

ادارت: ندیم گِل

DW.COM

ویب لنکس