1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستان: امریکی فوجیوں کی تعداد میں کمی

پینٹاگون کے مطابق امریکی افواج نے پاکستان میں اپنے اہلکاروں کی تعداد میں کمی کا فیصلہ کیا ہے۔

default

امریکی حکومت کے مطابق پاکستان کی حکومت نے اس سے تحریری درخواست کی تھی کہ اس کی خواہش ہے کہ امریکی اہلکاروں کی پاکستان میں موجودگی کو کم کیا جائے۔ پینٹاگون کے ترجمان کرنل ڈیو لیپین کے مطابق انہوں نے افواج میں کمی کا عمل شروع کردیا ہے۔

خیال رہے کہ یہ امریکی فوجی وہ ہیں جو پاکستانی افواج کی تربیت کا کام دے رہے ہیں یا پھر وہ القاعدہ اور طالبان کے خلاف جنگ میں پاکستان کی تکنیکی معاونت کر رہے ہیں۔ ان کی تعداد دو سے زائد نہیں بتائی جاتی ہے۔

ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کی امریکی افواج کے ہاتھوں ہلاکت کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات کشیدہ ہیں اور پاکستانی حکومت کی درخواست کو اسی تناظر میں دیکھا جا رہا ہے۔

NO FLASH Osama bin Laden Haus

بن لادن کو ایبٹ آباد میں امریکی افواج نے ایک خفیہ آپریشن کے دوران ہلاک کردیا تھا

تاہم دونوں ممالک کے اعلیٰ ترین عہدیدار بارہا کہہ چکے ہیں کہ تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ برطانیہ کے اپنے دورے میں امریکی صدر باراک اوباما اور برطانوی وزیرِ اعظم ڈیوڈ کیمرون نے پاکستان کے ساتھ مل کر دہشت گردی کے خلاف جنگ کو کامیاب بنانے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

پینٹاگون کے مطابق پاکستانی حکومت نے امریکی افواج کی پاکستان میں موجودگی میں کمی کی درخواست قریباً دو ہفتے قبل کی تھی۔

پاکستان نے اسی نوعیت کی ایک درخواست امریکی خفیہ تنظیم سی آئی اے کے اہلکاروں کی پاکستان میں موجودگی کے حوالے سے بھی کی تھی۔ یہ درخواست مارچ کے مہینے میں سی آئی اے کے اہلکار ریمنڈ ڈیوس کے ہاتھوں دو پاکستانیوں کے قتل اور ڈیوس کی حراست کے بعد پیدا ہونے والی صورتِ حال کے تناظر میں کی گئی تھی۔

رپورٹ: شامل شمس⁄ خبر رساں ادارے

ادارت: عدنان اسحاق

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات