1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستانی صدر اور بھارتی وزیر اعظم کی ملاقات: نئی امیدیں اور توقعات

پاکستانی صدر آصف علی زرداری آج کل امریکہ کے شہر نیویارک میں جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شریک ہیں اور وہ وہاں دوسرے معزز مہامانوں کے ساتھ ملاقاتوں میں مصروف ہیں۔

default

پاکستانی صدر آصف علی زرداری

پاکستان کا سیاسی منظر نامہ میریٹ ہوٹل میں خوفناک بم دھماکے کے بعد سے ایک بوجھل تصویر پیش کر رہا ہے۔ ملک کے اندر انتشار اور سکیورٹی خدشات پر بات جاری ہے۔ اِن حالات و واقعیات کے تناظر میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے صدر آصف علی زرداری کو اعلیٰ سطحی ملاقاتوں میں کئی وضاحتیں بھی پیش کرنا پڑ رہی ہوں گی۔ بھارتی وزیر اعظم من موہن سنگھ سے ملاقات کے بعد دونوں لیڈروں نے جاری جامع مذاکرات کو نئی جہت دینے کا فیصلہ کرنے کا اعلان کیا۔ اب اِس مناسبت سے دیکھا جائے گا کہ کیا معاملات کے حل میں سب سے بڑی رکاوٹ تنازعہ کشمیر پر بھی بات آگے بڑھ کر کسی منتطقی نتیجے پر پہنچتی ہے یا نہیں۔

Indien Premierminister Manmohan Singh

بھارتی وزیر اعظم من موہن سنگھ

پاکستانی صدر اور بھارتی وزیر اعظم کی ملاقات کا بھارت کے اندر بھی خیر مقدم محتاط الفاظ میںکیا گیا ہے۔ وہاں کی صائب رائے رکھنے والی قوتوں کا خیال ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیات تعلُقات کے آگے بڑھنے میں کچھ قوتیں حائل ہیں۔ بعض کے نزدیک یہ صرف ایک قوت فوج ہے اور کچھ پاکستان کی فوج کے علاوہ مذہبی لیڈر شپ کو بھی اہم تصور کرتی ہے۔

پاکستان میں بھی پاک بھارت لیڈر شپ ملاقات پر اظہار خیال کیا جا رہا ہے۔ اِس ملاقات اور دہشت گردی کے خاتمے پر پاکستان کے سب سے بڑے تھنک ٹینک اپری کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر پرویز اقبال چیمہ کے خیال میں پارلیمنٹ کے اندر ایک جامع پالیسی وضع کرنے کی ضرورت ہے۔

Audios and videos on the topic