1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

پاکستانی سینیٹر کو امریکی ویزا دینے سے انکار پر سینیٹ برہم

اسلام آباد میں امریکی سفارت خانے نے پاکستانی سینیٹ یا پارلیمانی ایوان بالا کے نائب چیئرمین مولانا غفور حیدری کو امریکا کا ویزا دینے سے انکار کر دیا ہے، جس پر سینیٹ کی طرف سے شدید برہمی کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

Maulana Abdul Ghafoor Haideri (DW/S. Rahim)

جے یو آئی ایف کے رہنما اور پاکستانی سینیٹ کے نائب چیئرمین مولانا غفور حیدری

پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد سے اتوار بارہ جنوری کو موصولہ نیوز ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کی رپورٹوں کے مطابق پارلیمانی ایوان بالا کے چیئرمین رضا ربانی نے کہا ہے کہ پاکستانی سینیٹ کی طرف سے اب اسلام آباد میں کسی بھی امریکی وفد، رکن کانگریس یا امریکی رہنما کا خیرمقدم نہیں کیا جائے گا۔

پاکستانی سیاست اور رازوں کو افشاء کرنے کی دھمکیوں کا رجحان

’سینیٹ کو مؤثربنائیں گے‘، نئے چیئرمین کی ڈی ڈبلیو سے گفتگو

جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما خالد محمود سومرو قتل

اس بیان کی وجہ یہ بنی کہ پاکستان کی دائیں بازو کی مذہبی سیاسی جماعت جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) فضل الرحمٰن گروپ کے ایک رہنما اور پاکستانی سینیٹ کے نائب چیئرمین مولانا غفور حیدری کو اقوام متحدہ کے ایک اجلاس میں شرکت کے لیے امریکا جانا تھا، جس کے لیے انہوں نے اسلام آباد میں امریکی سفارت خانے کو ویزے کے لیے درخواست بھی دے رکھی تھی۔

لیکن سفارت خانہ مولانا حیدری کو بروقت ویزا جاری کرنے میں ناکام رہا اور یوں جے یو آئی (ایف) کے یہ سیاستدان پروگرام کے مطابق آج اتوار بارہ فروری کو نیو یارک کے لیے روانہ نہ ہو سکے۔

Pakistan Maulana Fazlur Rehman Jamiat Ulema-e-Islam Fazl 23. Oktober 2014 (Banaras Khan/AFP/Getty Images)

جے یو آئی ایف کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن جو ایک مذہبی سیاسی لیڈر کے طور پر ’طالبان کے حامی اور امریکا کے ناقد‘ مانے جاتے ہیں

اس پر پاکستانی سینیٹ کے چیئرمین رضا ربانی نے اتوار کو جاری کردہ اپنے ایک بیان میں امریکی سفارت خانے کے فیصلے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نہ صرف یہ کہ پاکستانی پارلیمنٹ کا ایوان بالا کسی امریکی وفد کا خیر مقدم نہیں  کرے گا بلکہ اس وقت تک اس ملکی قانون ساز ادارے کا کوئی وفد بھی امریکا کا دورہ نہیں کرے گا جب تک امریکی حکام یہ وضاحت نہیں کرتے کہ مولانا غفور حیدری کو بروقت ویزا کیوں جاری نہیں کیا گیا۔

اس پر اسلام آباد میں امریکی سفارت خانے کے ایک ترجمان نے کہا کہ مولانا غفور حیدری کی ویزے کی درخواست پر کوئی تبصرہ نہیں کیا جائے گا کیونکہ درخواست دہندگان کے نجی کوائف کے تحفظ کی خاطر ویزا معاملات کی تفصیلات بتانے سے ہمیشہ پرہیز کیا جاتا ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس نے لکھا ہے کہ پاکستانی سینیٹ کے نائب چیئرمین مولانا غفور حیدری کا تعلق جمعیت علمائے اسلام (فضل الرحمٰن  گروپ) سے ہے، جس کے رہنما مولانا فضل الرحمٰن ایک مذہبی سیاسی لیڈر کی حیثیت سے عام طور پر طالبان کے حامی اور اپنے امریکا مخالف موقف کی وجہ سے جانے جاتے ہیں۔

DW.COM