1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

ٹی ٹوئنٹی :انگلینڈ بن گیا چیمپئن

کریگ کائیز ویدر اور کیون پیٹرسن کی دھواں دار بلے بازی کے بدولت انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم ورلڈ ٹوئنٹی ٹوئنٹی کرکٹ کپ جیتنے میں کامیاب ہوگئی ہے۔

default

انگلش قائد پاؤل کولنگ ووڈ

فائنل مقابلے میں انگلینڈ نے آسٹریلیا کو سات وکٹوں سے شکست دی اور 148 رنز کا مطلوبہ ہدف سترہ اوورز کے اندر ہی حاصل کرڈالا۔

برج ٹاؤن بارباڈوز کے میدان پر انگلش کپتان پاؤل کولنگ ووڈ نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا تھا۔ آسٹریلیا کی بیٹنگ کا آغاز مایوس کن انداز میں ہوا، دونوں افتتاحی بلے باز یعنی شین واٹسن اور ڈیوڈ وارنر محض دو دو رنز بناسکے۔ ان کے بعد چوتھے نمبر پر کھیلنے والے بریڈ ہیڈن بھی محض ایک رنز بناکر پویلین لوٹ گئے۔ اوائل کے تینوں اوورز کی پہلی گیندوں پر ایک ایک آسٹریلوی بلے باز آؤٹ ہوتا رہا اور ایک موقع پر محض آٹھ کے مجموعے پر تین وکٹیں گرچکی تھیں۔

Cricket England Australien

اوائل کے تینوں اوورز کی پہلی گیندوں پر ایک ایک آسٹریلوی بلے باز آؤٹ ہوتا رہا

اس موقع پر کپتان مائیکل کلارک اور ڈیوڈ ہسی نے ٹیم کی بیٹنگ کو سہارا دیا۔ پینتالیس کے مجموعی اسکور پر انگلش کپتان کولنگ ووڈ نے گرائم سوان کی گیند پر کلارک کا شاندار کیچ پکڑ کر ان کی اننگ کا خاتمہ کرڈالا۔ کلارک ستائیس گیندوں پر ستائیس رنز بناسکے جس میں دو چوکے شامل تھے۔ ان کے بعد کیمرون وائٹ نے ہسی کا ساتھ دیا اور مجموعی اسکور 147 رنز تک پہنچانے میں کامیاب رہے۔ وائٹ تیس رنز بناسکے تاہم آسٹریلوی اننگ کے سرفہرست بلے باز ہسی ہی رہے جنہوں نے چوون گیندوں پر دو چوکوں اور دو ہی چھکوں کے سہارے انسٹھ رنز جوڑے۔ رائن سائڈ بوٹم نے چار اوورز میں چھبیس رنز دے کر دو وکٹیں سمیٹیں۔

جواباً اگرچہ افتتاحی انگش بلے باز مائیکل لمب بھی محض دو رنز بناکر آؤٹ ہوئے تاہم ان کے ساتھی کریگ کائیز ویدر اور تیسرے نمبر پر کھیلنے کے لئے آنے والے سٹائلش بلے باز کیون پیٹرسن نے خوب رنز بنائے۔

Kevin Pieterson

ٹورنامنٹ کے بہترین کھلاڑی کیون پیٹرسن

دونوں کے سامنے آسٹریلوی باؤلز اور فیلڈرز بالکل بے بس اور بے چارہ دکھائی دے رہے تھے۔ کائیز ویدر نے اننچاس گیندوں پر دو چھکوں اور چار چوکوں کی مدد سے تریسٹھ رنز کی خوبصورت جبکہ پیٹرسن نے اکتیس گیندوں پر ایک چھکے اور چار چوکوں کی مدد سے سینتالیس رنز کی دھواں دار اننگ کھیلی۔

دونوں کی جوڑی نے ایک سو گیارہ رنز کی شراکت قائم کی۔ انگلینڈ نے باآسانی مطلوبہ 148 رنز سترہ اوورز کے اندر ہی حاصل کرکے عالمی چیمپئن ہونے کا اعزاز حاصل کیا۔ فائنل مقابلے میں آسٹریلیا کے بلے بازوں نے آٹھ چوکے اور تین چھکے لگائے تھے جبکہ انگلش ٹیم نے بارہ چوکے اور چار چھکے مارے۔

کائیز ویدر دن کے بہترین کھلاڑی قرار پائے جبکہ پیٹرسن کو پورے ٹورنامنٹ کے بہترین کھلاڑی کا اعزاز ملا۔

رپورٹ : شادی خان سیف

ادارت :عدنان اسحاق

DW.COM