1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

ٹیزے برادری کا سالانہ اجتماع

ٹیزے فرانس کا ایک علاقہ ہونے کے ساتھ ساتھ مسیحی نوجوانوں کے مابین سماجی میل جول بڑھانے کا پلیٹ فارم بھی ہے۔ اس وقت اس برادری کا سالانہ اجتماع برلن میں جاری ہے۔

عام طور پر جرمن دارالحکومت میں کرسمس اور نئے سال کے شروع ہونےکے دوران قدرے خاموشی چھائی ہوئی ہوتی ہے۔ لیکن اس سال کچھ ایسا نہیں ہے۔ اس سال یورپ کے ہر کونے سے نوجوان یہاں جمع ہیں۔ یہ نوجوان عالمی مسیحی اخوت پر مبنی برادری ’ٹیزے‘ کے سالانہ اجتماع میں شرکت کے لیے یہاں پہنچے ہیں۔ اپنی نوعیت کے اس چونتیسویں اجلاس میں تقریباً تیس ہزار نوجوان شریک ہیں۔

Taize Treffen in Berlin

ٹیزے کا سالانہ اجلاس یکم جنوری کو اختتام پذیر ہو گا

جرمن دارالحکومت برلن عام طور پر پارٹیوں اور تفریحی سرگرمیوں کے شہر کے طور پر مشہور ہے لیکن آج کل یہ شہرکچھ اور ہی منظر بیان کر رہا ہے۔ یہاں پر موجود نوجوان پارٹی نہیں کر رہے بلکہ وہ مذہبی رسومات ادا کرنے اور روحانیت حاصل کرنے کے لیے یہاں جمع ہیں۔ ان سب کا تعلق ٹیزے کمیونٹی سے ہے۔ ٹیزے فرانس کا ایک علاقہ ہونے کے ساتھ ساتھ مسیحی نوجوانوں کے مابین سماجی میل جول بڑھانے کا پلیٹ فارم بھی ہے۔

ٹیزے کے روح رواں برادر آلوئس نے بتایا کہ اس اجتماع کے لیے برلن کیوں خاص اہمیت رکھتا ہے۔’’ برلن دنیا کے اُن افراد کے لیے ایک علامتی شہر بن چکا ہے، جو آپس کی دیواریں گرانا چاہتے ہوں اور اعتماد بحال کرنے کے خواہاں ہیں۔ دیواریں صرف قوموں کو ہی جدا نہیں کرتیں بلکہ یہ لوگوں کے دلوں میں بھی رخنہ ڈالتی ہیں۔ ہم ان دنوں کے دوران اپنے درمیان موجود تمام دیواریں گرانے کی کوشش کریں گے اور اعتماد کے ذرائع سے نئی قوت حاصل کریں گے‘‘۔

1940 ء میں ٹیزے کیمونٹی کی بنیاد رکھی گئی تھی۔ تاہم وقت کے ساتھ ساتھ اس کمیونٹی میں اضافہ ہوتا گیا اور آج اسے یورپی نوجوانوں کا سب سے بڑا اور منظم پلیٹ فارم بھی کہا جاتا ہے۔ ساٹھ کی دہائی میں نوجوانوں کی ٹیزے کمیونٹی میں دلچسپی نمایاں طور پر بڑھی۔ پھر 1966ء میں اس کمیونٹی کی پہلی بین الاقوامی میٹنگ بھی منعقد کی گئی ۔ تاہم 1978ء میں پہلا سالانہ اجلاس ہوا، جس کے بعد سے یہ سلسلہ آج تک جاری ہے۔

برلن کی مرکزی نمائش گاہ میں اس سالانہ اجلاس کا اہتمام کیا گیا ہے۔ ہر سال یورپ کا کوئی نہ کوئی شہر ٹیزے کمیونٹی کے نوجوانوں کو اپنے ہاں دعوت دیتا ہے اور ہر مرتبہ اس سالانہ اجتماع کا کوئی نہ کوئی موٹو بھی ہوتا ہے۔ اس مرتبہ کا موٹو ہے، ’اعتماد کے راستے ‘۔

Taize Treffen in Berlin

ٹیزے مسیحی نوجوانوں کے مابین سماجی میل جول بڑھانے کا پلیٹ فارم بھی ہے

برلن میں موجود تیس ہزار نوجوانوں کے نام پاپائے روم نے اپنے خصوصی پیغام میں کہا کہ مذہب کے حوالے سے جو خوف پایا جاتا ہے، وہ اپنے آپ کو اس طوق سے آزاد کر لیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ نوجوانوں کو سماجی سرگرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے۔ برلن اس وقت رواداری اور بھائی چارے کی علامت دکھائی دے رہا ہے۔ کیونکہ اس اجتماع میں کیتھولک اور پروٹسٹنٹ چرچ سے تعلق رکھنے والے نوجوان موجود ہیں۔

ایک نوجوان کا کہنا تھا کہ ان چار دنوں کے دوران وہ مختلف پروگراموں کے ذریعے یہ معلوم کرنے کی کوشش کریں گے کہ کیتھولکس اور پروٹسٹنٹس کے درمیان کونسی اقدار مشترک ہیں اور کن امور پر ان میں اختلاف پایا جاتا ہے۔ اس کمیونٹی کے نظریہ اخوت کے مطابق نوجوانوں کو رحم دلی، سادگی اور مصالحت کے جذبے کے تحت زندگی بسر کرنے کی ترغیب دی جاتی ہے۔ 28 دسمبر سے شروع ہونے والا ٹیزے کا سالانہ اجلاس یکم جنوری کو اختتام پذیر ہو گا۔

رپورٹ : عدنان اسحاق

ادارت: حماد کیانی

DW.COM