1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

ٹور ڈی فرانس کا مشکل ترین مرحلہ

سائیکلنگ کےعالمی منظر نامے پر ٹور ڈی فرانس اننتہائی معتبر سائیکا ریس تصور کی جاتی ہے جو ایک طرح کی غیر سرکاری عالمی چیمپئن کی حثیت رکھتی ہے۔

default

ٹور ڈی فرانس میں شرکت کرنےوالے سائیکل سوار

سائیکلنگ کی دنیا کی معتبر ترین ریس ٹوری ڈی فرانس جاری و ساری ہے۔ اِتوار سے نویں سٹیج کے لئے سائیکل سواروں کو دو سو چوبیس کلو میٹر کا فاصلہ طے کرنا ہے۔ فرانسیسی شہر ٹولُوس سے شروع ہونےوالی اِس منزل میں شروع میں تو سائیکل سواروں کو اونچی نیچی گزرگاہ سے گزرنا ہو گا مگر جوں جوں منزل یا سٹیج کے وسط وہ پہنچیں گے توں توں اُن کو خاصی بلند پہاڑی چو ٹیوں کو سر کرنا ہو گا۔ اِس مناسبت سے یہ خاصی دشوار گزار سٹیج قرار دی جا سکتی ہے۔

Tour de France 2007 - Route - Großbild

ٹور ڈی فرانس کا کی گزرگاہ یا رُوٹ

اِس سٹیج کے دوران سائیکل سواروں کو دو بلند پہاڑی چوٹیوں کا سامنا ہے۔ ایک چوٹی پندرہ سو اُنہتر میٹر اوردوسری چودہ سو نواسی میٹر بلند ہے۔ مشکل یہ ہے کہ راستہ خاصا پیچیدہ اور کھٹن ہے۔ پہلے ایک سو تیرہ کلو میٹر بھی دشوار ہیں لیکن اگلے ایک سو گیارہ کلو میٹر سائیکل سواروں کی ہمت اور حوصلے کا اصل امتحان ہے۔

Lance Armstrong gewinnt zum siebten Mal die Tour de France

ٹور ڈی فرانس سائیکل ریس کے چھ مرتبہ کے چیمپئن لانس آرمسٹرانگ اپنی ٹرافی کے ساتھ

اِس سے پہلے بھی پہاڑیوں سے گزرنے والی ایک سٹیج تھی جو ساتویں تھی جس میں چودہ سو ایک میٹر بلند چوٹی کو سائیکلسٹس نے پار کیا تھا۔ اِس منزل کے بعد ایک دِن آرام کا ہے لیکن پیر کے دِن سے شروع ہونے والی دسویں منزل بھی کوئی آسان نہیں کیونکہ اُس میں سائیکل سواروں کو دو ہزار ایک سو پندرہ میٹر بلند پہاڑ کو سر کرنا ہے۔ پہاڑی راستوں کی مشکلات کے تناظر میں سائیکل سواروں کو باقاعدہ آرام کا موقع دیا جاتا ہے۔ منگل بھی آرام کا دِن ہے۔ ابھی تک لکسمبورگ کے سائیکل سوار کم کرشن سبقت حاصل کئےہوئےہیں۔

ٹور ڈی فرانس کےدوران سائکل سواروں کے لیبارٹری ٹیسٹ بھی جاری رہتے ہیں کہ کہیں اُن میں سے کسی نے اپنی استعداد بڑھانے کے لئے ممنوعہ ادویات کا استعمال نہ کیا ہو۔ سپین کے سائیکل سوار Manuel Beltranکا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔ ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد Manuel Beltranکو ٹیم سےخارج کردیاگیا ہے۔ گزشتہ سال بھی ڈوپ ٹیسٹ کے متعدد واقعیات سامنے آئے تھے۔

ٹور ڈی فرانس کی تاریخ میں سب سےکامیاب امریکہ کے لانس آرمسٹرانگ ہیں۔ اُنہوں نے چھ مرتبہ اِس ریس میں کامیابی حاصل کی تھی۔

ٹور ڈی فرانس میں کُل اکیس منازل ہیں اور سائیکل سواروں کو تین ہزار پانچ سو کلو میٹر فاصلہ طے کرنا ہوتا ہے ۔ یہ ریس ستائیس جولائی کو اختتام پذیر ہو گی۔