ٹوئیٹر کی ٹائم لائن بدل گئی | سائنس اور ماحول | DW | 10.02.2016
  1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

سائنس اور ماحول

ٹوئیٹر کی ٹائم لائن بدل گئی

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئیٹر نے اپنی ٹائم لائن میں آج بدھ کے روز ایک ڈرامائی تبدیلی کر دی ہے۔ ٹوئیٹر کی طرف سے کہا گیا ہے کہ اب صارفین اپنی مرضی کے مطابق اپنی ٹائم لائن پر ٹوئیٹس نظر آنے کو تبدیل کر سکیں گے۔

ٹوئیٹر کے ہوم پیچ کو بھی ٹائم لائن کا ہی نام دیا جاتا ہے۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ٹائم لائن میں تبدیلی کا ایک مقصد مشتہرین کی توجہ حاصل کرنا بھی ہے کیونکہ اب ایسا ممکن ہو سکے گا کہ وہ ٹوئیٹس زیادہ واضح ہوں گے جنہیں اشتہاری کمپنیاں یا مختلف ادارے اپنی مصنوعات کی تشہیر کے لیے منتخب کریں گے۔

ٹوئیٹر کی طرف سے یہ تبدیلی سرمایہ کاروں کو چوتھی سہ ماہی میں اپنی کمائی کے بارے میں رپورٹ فراہم کرنے سے کچھ گھنٹے قبل کی گئی۔ ان سرمایہ کاروں کی طرف سے کمپنی پر دباؤ ڈالا جا رہا تھا کہ وہ اپنے صارفین کی تعداد اور اشتہاروں کے ذریعے کمائی بڑھانے کے لیے اس کو استعمال کو زیادہ آسان بنائے۔

روئٹرز کے مطابق ٹوئیٹر کی طرف سے ٹائم لائن میں تبدیلی کے حوالے سے خبریں گزشتہ ہفتے سے گردش کر رہی تھیں جس کے رد عمل میں بعض صارفین نے اس کی مخالفت بھی کی۔ ان کا کہنا تھا کہ اپنی ٹائم لائن کو فیس بُک کی نیوز فیڈ کی طرح بنا کر ٹوئیٹر دراصل اپنا منفرد فیچر کھو دے گا۔

یہ بات صارف کی مرضی پر ہے کہ وہ اگر چاہے تو اس تبدیل شدہ ٹائم لائن کی بجائے وہ ٹوئیٹر کی روایتی ٹائم لائن ہی دیکھ سکتا ہے

یہ بات صارف کی مرضی پر ہے کہ وہ اگر چاہے تو اس تبدیل شدہ ٹائم لائن کی بجائے وہ ٹوئیٹر کی روایتی ٹائم لائن ہی دیکھ سکتا ہے

ایڈورٹائزرز کی طرف سے کی جانے والی ٹوئیٹس کو مختلف لوگوں کی ٹائم لائن پر زیادہ واضح کر کے دکھانے سے اس بات کے امکانات بڑھ جائیں گے کہ وہ اسے کلک کریں۔ نئی ٹائم لائن کی ٹیسٹنگ کے دوران ٹوئیٹر کی طرف سے اپنے ایک بلاگ میں لکھا گیا تھا کہ اس طرح صارفین کی طرف سے اشتہارات اور لائیو ایونٹس جیسے ٹوئیٹس پر زیادہ رد عمل دیکھا گیا۔ مشتہرین کا ایک اعتراض یہ بھی تھا کہ ترتیب وار دکھائے جانے کی وجہ سے ان کا اشتہار بہت جلد غائب ہو جائے گا۔

نئی تبدیلی کے بعد جب کوئی صارف اپنی ٹائم لائن کھولے گا تو اسے گزشتہ چند گھنٹوں کے دوران کی جانے والے ٹوئیٹس پہلے نظر آئیں گی جو ٹوئیٹر کے خیال میں اس صارف کے لیے اہم ہو سکتی ہیں۔ اس کے بعد روایتی طریقے سے ٹوئیٹس نظر آئیں گی جس میں سب سے پہلی ٹوئیٹ سرفہرست ہوتی ہے اور اس سے پہلے وہ اس سے نیچے۔ یہ بات صارف کی مرضی پر ہے کہ وہ اگر چاہے تو اس تبدیل شدہ ٹائم لائن کی بجائے وہ ٹوئیٹر کی روایتی ٹائم لائن ہی دیکھ سکتا ہے۔