1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ٹریزا مے آج برطانوی وزیراعظم بن جائیں گی

وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون آج کے بعد سابق وزیراعظم بن جائیں گے۔ برطانیہ کی طرف سے یورپی یونین کو چھوڑنے کے سیاسی جھٹکے کے بعد آج ٹریزا مے نئی وزیراعظم کے طور پر یہ عہدہ سنبھال لیں گی۔

برطانیہ کی تاریخ میں مارگریٹ تھیچر کے بعد گزشتہ چھ برسوں سے وزیر داخلہ کے عہدے پر فائز رہنے والی ٹریزا مے آج برطانیہ کی دوسری خاتون وزیراعظم بن جائیں گی۔ ان کا سب سے پہلا اور انتہائی مشکل کام یورپی یونین کو چھوڑنے کے عمل کو مکمل کرنا ہوگا۔ تجزیہ کاروں کے مطابق یہ عمل اس وجہ سے بھی مشکل ہو گا کہ انہیں ہر حال میں ایسی شرائط پر اتفاق کرنا ہوگا، جن میں برطانوی مفادات کو مدنظر رکھا گیا ہو۔

یورپی یونین کے حق میں مہم چلانے والے برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے ریفرنڈم کے نتائج سامنے آنے کے بعد مستعفی ہونے کا اعلان کر دیا تھا۔ اس کے بعد برطانیہ کی برسراقتدار قدامت پسند جماعت نے وزارت عظمیٰ کے لیے دو خواتین کو نامزد کیا تھا۔ ان خواتین کے درمیان انتخابی مقابلہ ستمبر میں کروایا جانا تھا لیکن چند روز پہلے مے کی حریف امیدوار اور وزیر برائے توانائی اینڈریا لَیڈسم نے اچانک اس دوڑ سے دست بردار ہونے کا اعلان کر دیا تھا۔

London Premier David Cameron verlässt Downing Street

وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون 10 ڈاؤننگ سٹریٹ سے رخصت ہوتے ہوئے

اطلاعات کے مطابق ٹریزا مے آج شام سے پہلے پہلے 10 ڈاؤننگ سٹریٹ میں بطور وزیراعظم منتقل ہو جائیں گی۔ توقع کی جا رہی ہے کہ وہ فوری طور پر ایک نئی کابینہ کی تشکیل کا عمل شروع کر دیں گی۔ اس دوران وہ اپنی ہی جماعت کے ان سیاسی مخالفین کو بھی مطمئن رکھنے کی کوشش کریں گی، جو یورپی یونین کے مسئلے پر تقسیم ہو چکے ہیں۔

ریفرنڈم سے پہلے مے برطانیہ کے یورپی یونین کا رکن رہنے کے حق میں تھیں لیکن ووٹنگ کے بعد سے وہ متعدد مرتبہ کہہ چکی ہیں کہ ’’بریگزٹ کا مطلب بریگزٹ‘‘ ہی ہے اور ان کے حمایتیوں کی نظر میں وہ انتہائی کامیابی سے یورپی یونین سے علیحدگی کے عمل کو مکمل کر لیں گی۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق توقع کی جا رہی ہے کہ وہ متعدد وزارتوں پر خواتین کو لے کر آئیں گی اور ڈیوڈ کیمرون کے وزیر خزانہ جارج اوسبورن بھی اپنا عہدہ کھو سکتے ہیں۔

ٹریزا مے برطانیہ کی ’آئرن لیڈی‘ کے نام سے مشہور سابق وزیراعظم مارگریٹ تھیچر کے ساتھ بھی کام کر چکی ہیں اور بعض قدامت پسند سیاسی حلقوں کے نزدیک وہ ایک ’مشکل‘ خاتون سیاست دان تصور کی جاتی ہیں۔

گزشتہ پیر کے روز سے مالیاتی منڈیوں، جو کہ ریفرنڈم کے بعد سے مندی کا شکار نظر آ رہی تھیں، میں بہتری نظر آ رہی ہے۔ پیر کو یہ خبر منظر عام پر آئی تھی کہ تھیریسا مے جلد ہی برطانوی وزیراعظم بن جائیں گی۔ ڈالر اور یورو کے مقابلے میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر میں بھی بہتری نظر آ رہی ہے۔