1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ٹرمپ کے لیے ایک اور جھٹکا، سام کلووِس پیچھے ہٹ گئے

امریکی محمکہ زراعت میں انتہائی اعلیٰ عہدے کے لیے نامزد کردہ سائنسدان کلووِس نے اس عہدے پر کام کرنے سے معذرت کر لی ہے۔ امریکی صدارتی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت کے حوالے سے جاری تحقیق میں ان کا نام بھی شامل تفتیش ہے۔

خبر رساں ادارے ڈی پی اے نے امریکی میڈٰیا رپورٹوں کے حوالے سے بتایا ہے کہ امریکی محمکہ زراعت میں ایک اعلیٰ عہدے کی خاطر نامزد کیے جانے والے سینئر سائنسدان سام کلووِس کو اب اس محکمے میں ملازمت نہیں مل سکے گی۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس عہدے کی خاطر انہیں نامزد کیا تھا۔

ایف بی آئی کا امریکی صدر کے قریبی ساتھی کے گھر پر چھاپہ

امریکی انتخابات اور روس:خصوصی وکیل کی گرینڈ جیوری، ٹرمپ برہم

ٹرمپ نے جرمنی میں پوٹن سے ’ایک غیر اعلانیہ ملاقات‘ بھی کی

ویڈیو دیکھیے 00:10

ٹرمپ اور پوٹن کا مصافحہ

سام کلووِس سن دو ہزار سولہ میں منعقد ہوئے امریکی صدارتی انتخابات میں صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم کا حصہ بھی تھے۔ ان پر شدید تنقید کی جا رہی ہے کہ انہوں نے اس مہم کے دوران خارجہ امور کے ایک مشیر جارج پاپاڈوپولوس کی حوصلہ افزائی کی تھی کہ وہ روسیوں کے ساتھ رابطہ کریں۔

عدالتی ذرائع کے مطابق جارج پاپاڈوپولوس نے اعتراف جرم کر لیا ہے کہ انہوں نے اس حوالے سے تفتیش کاروں کے ساتھ جھوٹ بولا تھا کہ انہوں نے صدر ٹرمپ کی صدارتی مہم اور روسیوں کے مابین رابطہ کاری کی کوشش نہیں کی تھی۔ اگرچہ کلووِس کا نام اس عدالتی دستاویز میں نہیں آیا تھا تاہم بعد ازاں امریکی میڈیا نے کہا کہ یہ سائنسدان بھی اس مبینہ رابطے میں ملوث تھے۔

سام کلووِس نے امریکی صدر ٹرمپ کو لکھے گئے اپنے ایک میں کہا کہ امریکی سیاسی ماحول نے ناممکن بنا دیا ہے کہ وہ ملکی محمکہ زراعت میں ملازمت کے حوالے سے کوئی غیرجانبدار اور شفاف فیصلہ کر سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹرمپ کے مخالفین ایک مہم چلائے ہوئے ہیں، جو دن بدن مزید شدت اختیار کرتی دکھائی دیتی ہے۔

کلووِس کے مطابق وہ اس سیاسی گرما گرمی سے الگ ہو کر امریکی عوام کی خدمت کرنا چاہتے ہیں۔ یہ خط میڈیا کو بھی جاری کیا گیا ہے، جس میں لکھا گیا ہے کہ کلووِس امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کی کامیابی کی خاطر ہر ممکن جائز قدم اٹھائیں گے۔

دوسری طرف وائٹ ہاؤس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر ٹرمپ کی انتظامیہ کلووِس کے اس فیصلے کا احترام کرتی ہے۔ کلووِس کو جب اس عہدے کے لیے نامزد کیا گیا تھا تو یہ الزامات بھی عائد کیے گئے تھے کہ وہ محمکہ زراعت میں اس عہدے کے لیے لازمی طور پر درکار مناسب قابلیت نہیں رکھتے۔ ٹرمپ نے کلووِس کو امریکی محکمہ زراعت میں اعلیٰ ترین سائنسدان کے عہدے کے لیے نامزد کیا تھا۔

DW.COM

Audios and videos on the topic