1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

’ٹرمپ کی انتخابی مہم کے روس سے رابطے‘: پارلیمانی تفتیش ہو گی

امریکی ایوان نمائندگان کے ایک رکن کے مطابق ملکی کانگریس کی ایک کمیٹی ان الزامات کی پارلیمانی چھان بین کرے گی کہ موجودہ صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم کے اہم ارکان گزشتہ برس کے صدارتی الیکشن سے قبل روس کے ساتھ رابطوں میں تھے۔

Symbolbild US-Wahl - Donald Trump & Wladimir Putin (picture-alliance/dpa/S. Thew & A. Druzhinin/Ria Novosti/Kremlin Pool)

روسی صدر پوٹن، دائیں، اور امریکی صدر ٹرمپ

امریکی دارالحکومت واشنگٹن سے جمعرات دو مارچ کو ملنے والی نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ ایوان نمائندگان کے ایک رکن ایڈم شِف نے بدھ کی رات بتایا کہ اس ایوان کی انٹیلیجنس امور کی نگران کمیٹی اب باقاعدہ طور پر اس امر کی تفتیش کرے گی کہ آیا یہ الزامات درست ہیں کہ گزشتہ برس ریپبلکن صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے ذمے دار اہلکار مبینہ طور پر ماسکو میں روسی حکومت کے ساتھ رابطوں میں تھے۔

ایڈم شِف نے، جو خود بھی ایوان نمائندگان کی انٹیلیجنس امور کی نگران کمیٹی کے رکن ہیں، کہا کہ اس ایوان میں بدھ یکم  مارچ کے روز ڈیموکریٹ اور ریپبلکن ارکان کے مابین ہونے والے ایک تحریری معاہدے کے مطابق ٹرمپ کی انتخابی مہم کے روس کے ساتھ مبینہ رابطوں کی باقاعدہ پارلیمانی چھان بین کی جائے گی۔

فلین کو روس کو پابندیاں ہٹانے کی یقین دہانی مہنگی پڑ گئی

پوٹن سے متعلق سوال پر ٹرمپ کا حیران کن جواب، کریملن ناراض

شِف نے کہا، ’’ہم یہ کام کرنے کا تہیہ کیے ہوئے ہیں کیونکہ اس عمل کی درستگی کی ہر ممکنہ منطق موجود ہے کہ ایک جامع چھان بین کے ساتھ یہ طے کیا جائے کہ آیا ٹرمپ کی انتخابی مہم روس کے ساتھ رابطوں میں تھی؟‘‘

ڈی پی اے نے لکھا ہے کہ امریکی کانگریس کے رکن Adam Schiff  نے ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں لکھا کہ دونوں سیاسی جماعتوں، یعنی ریپبلکن اور ڈیموکریٹس، نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے سلسلے میں روس کے جملہ عملی اقدامات کی چھان بین کریں گی، بشمول اس بات کہ مبینہ طور پر ٹرمپ کی الیکشن مہم کا روس کے ساتھ کوئی حقیقی اشتراک عمل بھی تھا۔

USA Cleveland Paul Manafort Campaign Manager Donald Trump (picture-alliance/AP Photo/M. Rourke)

ٹرمپ کی انتخابی مہم کے سابق سربراہ پال مانافورٹ جنہیں مستعفی ہونا پڑ گیا تھا

ایڈم شِف نے امریکی نشریاتی ادارے ایم ایس این بی سی کے ساتھ ایک انٹرویو میں اس امر کی کوئی تفصیلات نہیں بتائیں کہ اس سلسلے میں ایوان نمائندگان کی انٹیلیجنس امور کی کمیٹی کے پاس کس قسم کے ٹھوس شواہد موجود ہیں تاہم انہوں نے یہ ضرور کہا کہ اس بارے میں اولین حلفیہ شہادت بہت جلد ریکارڈ کرا دی جائے گی۔

روس کے ساتھ روابط، ’ٹرمپ کے مشیر کے خلاف تفتیش‘

پوٹن نے ٹرمپ کی مدد کرنے کے ’احکامات‘ دیے، امریکی خفیہ ادارے

اس پس منظر میں یہ بات بھی اہم ہے کہ امریکی ذرائع ابلاغ نے گزشتہ ماہ فروری میں یہ الزامات بھی لگائے تھے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی انتخابی مہم کے ایک سابق نگران اعلیٰ پال مانافورٹ سمیت کئی شخصیات کے گزشتہ برس نومبر کے صدارتی الیکشن میں ٹرمپ کی حیران کن کامیابی سے پہلے کے عرصے کے دوران روس کے اعلیٰ انٹیلیجنس اہلکاروں کے ساتھ ’بار بار کے رابطے‘ رہے تھے۔

اس حوالے سے ایڈم شِف نے کہا کہ یہ بات واضح ہے کہ روسیوں کی طرف سے بلیک میلنگ، دباؤ میں لانے اور ملی بھگت جیسے کئی متنوع ہتھکنڈے استعمال کیے گئے تھے۔ ’’یہی وہ باتیں ہیں، جن کا اس پارلیمانی تفتیشی عمل کے دوران جائزہ لیا جائے گا۔‘‘

DW.COM

ملتے جلتے مندرجات