1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

ویلنگٹن ٹیسٹ برابر، سیریز پاکستان کے نام

نیوزی لینڈ کے شہر ویلنگٹن میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان دوسرا ٹیسٹ میچ بغیرکسی نتیجے پر ختم ہوگیا۔ اس طرح پاکستانی کرکٹ ٹیم 5 سال بعد کوئی ٹیسٹ سیریز جیتنے میں کامیاب ہوئی ہے۔

default

مصباح الحق کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا

ویلنگٹن ٹیسٹ میچ کے پانچویں روز پاکستانی ٹیم کو شروع میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور صرف بیالیس کے اسکور پر اس کے تین کھلاڑی توفیق عمر صفر، اظہرعلی دس اور محمد حفیظ بتیس رنز بناکر آؤٹ ہوگئے تھے۔ کھیل کے آخری دوسیشنز میں پاکستانی بلے بازوں نے انتہائی محتاط انداز میں بیٹنگ کی اور یوں لگتا تھا کہ پاکستانی ٹیم یہ میچ جیتنے کی کوشش ہی نہیں کر رہی۔ شاید پاکستانی ٹیم نے میچ کو ڈرا کرنے کی حکمت عملی اپنا رکھی تھی۔

Cricket Test Series zwischen Indien und Neuseeland 2

نیوزی لینڈ نے ڈینیئل ویٹوری کی سنچری کی بدولت 356 رنز بنائے تھے

کھیل ختم ہونے پر پاکستانی کرکٹ ٹیم نے دوسری اننگز میں پانچ کھلاڑیوں کے آؤٹ ہونے پر 226 رنز بنائے تھے۔

یونس خان پہلی اننگز کی طرح آخری اوور میں اکیاسی رنز کے انفرادی اسکور پر آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے مصباح الحق کے ساتھ مل کر چوتھی وکٹ پر 118رنز کی شراکت قائم کی تھی۔ مصباح الحق نے مسلسل چھٹی نصف سینچری مکمل کرنے میں کامیابی حاصل کی۔ وہ ستر کے اسکور پر ناٹ آؤٹ رہے۔ مصباح الحق کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ یونس اور مصباح کی شراکت میں ایسا دکھائی دے رہا تھا کہ شاید چائے کے وقفے کے بعد پاکستانی ٹیم میچ جیتنے کی کوشش کرے۔

اس میچ میں نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا اور پہلی اننگز میں ڈینیئل ویٹوری کی سنچری کی بدولت 356 رنز بنائے تھے، جس کے جواب میں پاکستانی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 374 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی۔

دوسری اننگز میں نیوزی لینڈ نے دو سو ترانوے رن بنا کر فتح کے لیے پاکستان کو نوے اوورز میں 274 رنز کا ہدف فراہم کیا تھا۔ نیوزی لینڈ کے کھلاڑی ولیم سن ساؤتھی اور کرس مارٹن نے دو، دو اور ڈینیئل ویٹوری نے ایک وکٹ لی۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے مابین چھ ایک روزہ میچوں کا پہلا میچ 22 جنوری کو ویلنگٹن میں ہی کھیلا جائے گا۔

رپورٹ: امتیاز احمد

ادارت: عدنان اسحاق

DW.COM