1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

ویسٹ بینک میں یہودیوں کی آبادکاری کا منصوبہ منظور

اسرائیلی حکومت نے ویسٹ بینک میں یہودی آباد کاروں کو بسانے کے پلان کی منظوری دے دی ہے۔ گزشتہ دو دہائیوں میں پہلی مرتبہ ویسٹ بینک میں نئی آبادکاری کے منصوبے کو منظور کیا گیا ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو کے دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ یہودی آباد کاری کے نئے منصوبے کی منظوری جمعرات کی شام دی گئی۔ اس کی منظوری اسرائیل کی حکومتی پالیسی کی بظاہر نگران سکیورٹی کابینہ کے طویل اجلاس میں دی گئی۔

بینجمن نیتن یاہو پہلے ہی واضح کر چکے ہیں کہ وہ آمونا بستی سے اجڑنے والے شہریوں کو مناسب مقام پر آباد کریں گے۔ آمونا کی بستی کو اسرائیلی سپریم کورٹ نے خلافِ قانون قرار دے کر منہدم کروا دیا تھا۔

اسرائیلی حکومت کے پلان کے مطابق نئی آبادکاری کا منصوبہ ویسٹ بینک میں پہلے سے موجود شیلُو کے قریب شروع کیا جائے گا۔ اس نئی آبادکاری میں دوہزار اپارٹمنٹس تعمیر کیے جائیں گے۔ اسرائیلی حکومت کے اِس منصوبے پر وائٹ ہاؤس نے براہِ راست کوئی تبصرہ کرنے سے گریز کیا ہے۔ وائٹ ہاؤس کی جانب سے یہ ضرور کہا گیا کہ آبادکاری کے مزید منصوبوں سے امن عمل کو تقوییت حاصل نہیں ہو گی۔

Symbolbild Israel Siedlungen im Westjordanland (picture-alliance/newscom/D. Hill)

ویسٹ بینک میں قائم ایک یہودی بستی میں تعمیر کیے گئے اپارٹمنٹس

فلسطینی حکومت کے ترجمان یوسف محمود کا کہنا ہے کہ ویسٹ بینک میں اسرائیلی حکومت کا یہودی آباد کاری کا پلان بنیادی طور پر امن مذاکرات کی بحالی کی کوششوں کے راستے میں رکاوٹیں کھڑی کرنے کی ایک اور کوشش ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ اسرائیلی حکومت اور فلسطینیوں کے درمیان مذاکراتی عمل معطل ہونے کے بعد اب بحال ہوتا دکھائی نہیں رہا۔ پی ایل او کی خاتون رہنما حنان اشراوی نے نیتن یاہو حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ غیرقانونی آبادکاروں کو خوش کرنے کے سلسلے میں ایسے منصوبوں کو آگے بڑھا رہی ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرش نے بھی اسرائیلی حکومتی پلان پر مایوسی کا اظہار کرنے کے علاوہ اس کی مذمت بھی کی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایسے اقدامات دو ریاستی تصور کے لیے مہلک ثابت ہونے کے علاوہ امن عمل کے لیے بھی خطرہ بن سکتے ہیں۔ سیکرٹری جنرل کے بیان میں یہ بھی کہا گیا کہ آبادکاری کی سرگرمیاں انٹرنیشنل لا کے تحت غیرقانونی اور امن کے راستے کی دیوار ہبن سکتی ہیں۔

ملتے جلتے مندرجات