1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

معاشرہ

ویت نام کے ایک گاؤں میں مست ہاتھیوں نے فصلیں روند ڈالیں

ویت نام میں سرکاری میڈیا کا کہنا ہے کہ نایاب جنگلی ہاتھیوں کے ایک بپھرے ہوئے غول نے شمالی ویت نام میں ایک  گاؤں کی وسیع زرعی اراضی پر پھیلی فصلوں کو پاؤں تلے روند ڈالا۔

ویت نام کی سرکاری نیوز ایجنسی نے آج بروز جمعرات اپنی ویب سائٹ پر خبر دی ہے کہ یہ مست ہاتھییوں کا لشکر ایک جنگلاتی علاقے سے ’نے ان‘ نامی صوبے کے ایک دیہات ’بائی دا‘ کی جانب بڑھ گیا اور اُس نے وہاں کھڑی فصلوں میں تباہی مچا دی۔ کسان فان وان دائی نے جب ان ہاتھیوں کو اپنی فصلیں تاراج کرتے دیکھا تو اس نے مقامی انتظامیہ کو مدد کے لیے بلایا۔

مقامی پولیس نے ڈرم بجا کر اور فائرنگ کر کے ہاتھیوں کو وہاں سے بھگانے کی بھر پور کوشش کی لیکن کامیاب نہ ہو سکے۔ ہاتھیوں کا غول مسلسل تین گھنٹے تک کھیتوں میں اچھل کود کرتا رہا اور جنگل میں لوٹنے سے قبل قریب دو ہیکٹر زمین پر پھیلی تمام فصلیں برباد کر ڈالیں۔

ویت نام میں محکمہ جنگلات کا کہنا ہے کہ ملک میں لگ بھگ ایک سو بیس ہاتھی ہی باقی رہ گئے ہیں۔ ان میں سے چالیس پانچ علیحدہ گروہوں میں رہتے ہیں جبکہ اسی ہاتھی محکمہ جنگلات کی تحویل میں ہیں۔

ہاتھیوں کی نسل میں کمی کا سبب جینیاتی تنوع میں کمی اور انسانوں کے ساتھ ان کی مڈبھیڑ بتایا جاتا ہے۔

DW.COM