1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نیٹو اجلاس: پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں

فرانس کے شہراشٹراس برگ میں جنگ مخالف مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئی ہیں جس میں کم از کم دو سو نوجوانوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا ہے۔ نیٹو کا اجلاس جمعے کے روز شروع ہورہا ہے۔

default

سخت ترین حفاظتی انتظامات کے باعث باڈں باڈن میں مظاہرے پر امن رہے

ہزاروں کی تعداد میں جنگ اور نیٹو مخالف مظاہرین فرانس کے شہرشٹراس برگ اور جرمنی کے دو شہروں کیہل اور باڈن باڈن میں جمع ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ جمعے کے روز مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کی ساٹھویں سالگرہ کے موقع پر اجلاس منعقد کیا جا رہا ہے جس میں امریکی صدر باراک اوباما سمیت جرمن چانسلر انگیلا میرکل، فرانسیسی صدر نکولا سارکوزی اور دیگر عالمی رہنما شرکت کررہے ہیں۔ اجلاس کا ایک اہم موضوع افغانستان میں نیٹو افواج کا کردار ہے۔

G 20 Demonstrationen

لندن میں جی بیس مخالف مظاہروں کے موقع پر ایک شخص کی ہلاکت کے باعث نیٹو مخالف مظاہرے تناؤ کا شکار ہیں


امریکی صدر باراک اوباما کی نئی افغان پالیسی کے بعد افغانستان میں طالبان کے خلاف جنگ کو مزید اہمیت حاصل ہوگئی ہے۔ امریکی صدر افغانستان میں مزید افواج تعینات کرنے کا اعلان کرچکے ہیں۔ اس ضمن میں نیٹو کے اس اجلاس میں مختلف نیٹو ممالک افغانستان میں جنگ پر ایک مشترکہ لائحہ عمل سامنے لانے کی کوشش کریں گے۔

مگر دوسری جانب جنگ مخالف ہزاروں مظاہرین شٹراس برگ، کیہل اور باڈن باڈن میں ان مقامات کے قریب تر پہنچنے کی کوششیں کر رہے ہیں جہاں نیٹو اجلاس کے مختلف ادوار منعقد کیے جانے ہیں۔ جمعرات کے روزاشٹراس برگ میں ہزاروں مظاہرین جب شہر کے مرکز تک پہنچنے کی کوشش کرہے تھے تو ان کو پولیس نے روکنے کے لیے آنسو گیس اور ربر کی گولیاں فائر کیں۔ مظاہرین کی جانب سے عمارتوں اور گاڑیوں پر پتھراؤ کی اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں۔ پولیس نے کم از کم دو سو نوجوانوں کو گرفتار کرلیا ہے۔

Egon Ramms mit Hamid Karzai und Dan McNeill

افغانستان میں نیٹو کا کردار اجلاس کا اہم موضوع ہے

نیٹہ مخالف مظاہرین نے پولیس کی جانب سے مظاہرین پر ’تشدّد‘ کی مذمت کی ہے۔ ان مظاہرین نے اشٹراس برگ کے نزدیک کیمپ قائم کیے ہوئے ہیں۔ شٹراس برگ میں موجود ڈوئچے ویلے اردو سروس کی رکن کشور مصطفیٰ نے بتایا ہے کہ شٹراس برگ میں ہر جگہ پولیس ہی پولیس ہے اور پرندہ بھی یہاں پر نہیں مار سکتا ہے۔ پولیس نے پورے شہر کو سیل کردیا ہے اور زمینی، فضائی اور بحری نگرانی کی جا رہی ہے۔

لندن میں جی بیس اجلاس کے دوران ہوئے مظاہروں میں ایک شخص کے ہلاک ہونے کی وجہ سے نیٹہ مخالف مظاہرے تناؤ کا شکار دکھائی دے رہے ہیں۔ جرمنی میں بھی اس حوالے سے سخت ترین حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں اور جرمن پولیس کو خدشہ ہے کہ مظاہرے پرتشدّد شکل اختیار کرسکتے ہیں۔

Audios and videos on the topic