1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

کھیل

نیوزی لینڈ کے خلاف پہلا ٹیسٹ: بھارت کا شاندار آغاز

بھارت اور نیوزی لینڈ کے درمیان ٹیسٹ سیریز کا پہلا میچ جمعرات سے احمد آباد میں شروع ہو گیا ہے۔ وریندر سہواگ کی شاندار اننگز کی بدولت پہلے دن کے اختتام پر میزبان ٹیم نے تین وکٹوں کے نقصان پر 329 رنز بنائے۔

default

وریندر سہواگ

بھارتی ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا اور چائے کے وقفےتک اوپنر گوتم گھمبیر کی وکٹ گنوانے پر اس کا مجموعی سکور 243 تھا، جو دن کے اختتام پر تین وکٹوں کے نقصان پر 329 ہو گیا۔

بھارت کی جانب سے پہلے دن کے ٹوٹل سے نیوزی لینڈ کے لئے اس ٹیسٹ میں آنے والی مشکلات کا اندازہ ہوتا ہے۔ میزبان ٹیم کے لئے صبح کے وقت ٹاس جیتنا بالکل ایسے ہی تھا، جیسے قسمت کی دیوی بھی ان پر مہربان ہو۔ ٹاس جیتنے پر کپتان ایم ایس دھونی نے کہا، ’ہاں، ہم پہلے بیٹنگ ہی کرنا چاہیں گے۔‘

اس خبر پر باؤنڈری کے باہر کھڑے ہربھجن سنگھ خوشی سے اچھل پڑے۔ سہواگ نے شاندار اننگز کھیلی۔ وہ ایک چھکے اور 24 چوکوں کی مدد سے 173رنز بنا چکے تھے، جب ڈینیئل ویٹوری نے ان کی ڈبل سنچری کی کوشش ناکام بنا کر انہیں واپس پویلین بھیج دیا۔ میچ کے پہلے روز سہواگ نے جو سنچری بنائی، وہ ان کی 22 ویں ٹیسٹ سنچری ہے۔

راہول ڈراوڈ نے بھی سنچری سکور کی ہے۔ وہ 104رنز پر کرس مارٹن کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔ تاہم پہلے دن کے کھیل میں آخری سیشن نیوزی لینڈ کے حق میں رہا، جس میں مہمان ٹیم نے سہواگ اور ڈراوڈ دونوں کی وکٹیں حاصل کر لیں اور صرف 86 رنز دئے۔

Rahul Dravid

راہول ڈراوڈ

اس سے قبل مہمان ٹیم کے کھلاڑی ان دونوں بیٹسمینوں کو آؤٹ کرنے کے دو قیمتی مواقع ضائع کر چکے تھے۔

بھارتی ٹیم کی پہلی وکٹ 60 کے سکور پر گری، دوسری 297 پر اور تیسری وکٹ 317 کے مجموعی سکور پر گری۔ دن کے اختتام پر سچن تندولکر 13 اور وی وی ایس لکشمن سات رنز کے ساتھ کریز پر موجود تھے۔ میزبان ٹیم کے لئے پہلے دن کے کھیل میں مایوس کن موقع صبح کے سیشن میں گوتم گھمبیر کی وکٹ کا جانا تھا، جو 21 رنز پر ہی آؤٹ ہو گئے۔

دونوں ملکوں کے درمیان اس ٹیسٹ سیریز میں تین میچ کھیلے جائیں گے۔ دوسرا میچ 12 نومبر سے حیدرآباد میں جبکہ فائنل ٹیسٹ 20 نومبر سے ناگپور میں کھیلا جائے گا۔

رپورٹ: ندیم گِل

ادارت: مقبول ملک

DW.COM

ویب لنکس