1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نیوزی لینڈ میں زلزلے کے جھٹکے، لوگوں میں خوف و ہراس

نیوزی لینڈ میں آج پیر کے روز زلزلےکےکئی جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں۔ ماہرین ارضیات کے مطابق ریکٹر اسکیل پر 6.0 کی شدت کے ان جھٹکوں کی وجہ سے کرائسٹ چرچ شہر کی کئی عمارتوں کو شدید نقصان پہنچا۔

default

نیوزی لینڈ کے وزیراعظم ’جان کی‘ کے مطابق زلزلے کے جھٹکوں کی وجہ سےکوئی جانی نقصان نہیں ہوا صرف 10افراد زخمی ہوئے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اطلاعات کے مطابق شہرکےکوئی 6 ہزار گھر متاثر ہوئے ہیں۔ امریکی جیولوجیکل سروے اور نیوزی لینڈ کے حکام کے مطابق زلزلے کی شدت ریکٹر اسکیل پر6 تھی۔ اس کے بعد ضمنی جھٹکے 5.2 کی شدت کے تھے۔

اس سے قبل فروری میں کرائسٹ چرچ میں 6.3 کی شدت کے زلزلے کی وجہ سے180سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔ وزیراعظم جان کی کے بقول جھٹکوں کی وجہ سے شہرکے رہائشیوں میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا کیونکہ فروری میں آنے والے زلزلے کے اثرات ابھی تک شہر میں دیکھے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ شہر میں تعمیر نو کا کام پہلے ہی کی طرح جاری رہے گا۔

Flash-Galerie Erdbeben in Neuseeland Christchurch

فروری میں کرائسٹ چرچ میں 6.3 کی شدت کے زلزلہ آیا تھا

پولیس انتظامیہ نے بتایا کہ شہر کے مرکز میں کئی عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئی ہیں لیکن خوش قسمتی سے تمام افراد محفوظ رہے۔ ساتھ ہی پولیس نے شہریوں کو کہا ہےکہ وہ اپنے رشتہ داروں، دوستوں اور پڑوسیوں کے بارے میں معلومات اکٹھی کریں تا کہ اگر کوئی لاپتہ ہے تو اس کی تلاش شروع کی جا سکے۔

پولیس نے شہریں سے سفرنہ کرنے کی درخواست کی ہے کیونکہ شہر میں ٹریفک سگنل کام نہیں کر رہے اور حادثات کے خطرات کافی زیادہ ہیں۔ ’’اسی وجہ سے بہتر ہے، جو جہاں ہے وہیں قیام کرے‘‘۔ لیکن اس اعلان کے باوجود بھی لوگ اپنے اہل خانہ یا رشتہ داروں کی خیریت معلوم کرنے کے لیے کرائسٹ چرچ کا رخ کر رہے ہیں۔

رپورٹ: عدنان اسحاق

ادارت: مقبول ملک

DW.COM