1. Inhalt
  2. Navigation
  3. Weitere Inhalte
  4. Metanavigation
  5. Suche
  6. Choose from 30 Languages

حالات حاضرہ

نواز شريف پر تيسری فرد جرم بھی عائد

پاکستان میں ایک احتساب عدالت نے آف شور کمپنیوں سے متعلق اور ایک ریفرنس کی بنیاد پر سابق وزیر اعظم نواز شریف پر تیسری فرد جرم بھی عائد کر دی ہے۔

بروز جمعہ دارالحکومت اسلام آباد میں احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کہا کہ فلیگ شپ انویسٹمینٹ ریفرنس پر کارروائی کرتے ہوئے نواز شریف کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ان الزامات کے مطابق شريف سن 2007 سے سن 2014 تک ’ايف زيڈ ای کيپيٹل‘ کے چيئرمين تھے۔ انہيں پاکستانی سپريم کورٹ نے ايک غير ملکی کمپنی کے ساتھ منسلک رہنے پر جولائی ميں نا اہل قرار دے ديا تھا۔

تين مرتبہ پاکستان کے وزير اعظم کا عہدہ سنبھالنے والے سرسٹھ سالہ نواز شريف کے وکيل ذاکر خان نے شريف کے خلاف الزامات مسترد کر ديے ہيں۔ سابق وزير اعظم شريف نے خود بھی الزامات مسترد کيے ہيں۔ وہ آئندہ ہفتے پاکستان واپس جائيں گے اور مقدمے کا سامنا کريں گے۔

جمعرات کے دن بھی اس عدالت نے بدعنوانی سے متعلق دو کیسوں پر نواز شریف کے خلاف فرد جرم عائد کر دی تھی۔ نواز شریف اس وقت لندن میں ہیں، جہاں ان کی اہلیہ کا علاج جاری ہے۔

عدالت کی آئندہ سماعت چھبيس اکتوبر کو ہو گی، جس ميں نواز شريف اور ان کے خاندان کے ديگر ارکان کے خلاف تمام رنفرنسز پر عدالتی کارروائی ہو گی۔